Homeحیدرآباد

ٹریفک چالانوں کی ادائیگی کا عمل تیزی سے جاری

ان چالانات کی ادائیگی پر ٹریفک قواعد کی خلاف ورزی کرنے والوں کی جانب سے بہتر ردعمل حاصل ہورہا ہے۔ان چالانات کی رقم کی ادائیگی کے لئے اب صرف دو دن کی ہی مہلت باقی ہے کیونکہ یہ سہولت 31 مارچ تک نافذ رہے گی۔

ٹریفک چالانوں کی ادائیگی کا عمل تیزی سے جاری

مکہ مسجد میں بم دھماکہ کے 15مکمل
مسلم وکلا کو سرکاری طور پر نمائندگی دینے کی اپیل
این ایس یو آئی کے  18 کارکنوں کی ضمانت منظور

حیدرآباد: حیدرآباد، سائبرآباد اور رچہ کنڈہ پولیس کمشنریٹس کے حدود میں ٹریفک چالانوں کی ادائیگی کے عمل میں تیزی پیداہوگئی ہے۔ یکم مارچ سے اس سہولت کا آغاز ہوا ہے اور 29 مارچ تک 2.50کروڑ چالانات اداکیے گئے جس کے ذریعہ 800کروڑروپئے سرکاری خزانہ میں جمع کروائے گئے۔

 ان چالانات کی ادائیگی پر ٹریفک قواعد کی خلاف ورزی کرنے والوں کی جانب سے بہتر ردعمل حاصل ہورہا ہے۔ان چالانات کی رقم کی ادائیگی کے لئے اب صرف دو دن کی ہی مہلت باقی ہے کیونکہ یہ سہولت 31 مارچ تک نافذ رہے گی۔

اس سہولت میں زیرالتوا ٹریفک چالانات پر بھاری ڈسکاونٹ دیاجارہا ہے۔ریاست بھر میں بڑے پیمانہ پر زیرالتوا ٹریفک چالانات کو ختم کرنے کے لئے یہ قدم اٹھایاگیا ہے جس کی شہریوں کی جانب سے ستائش کی جارہی ہے۔ پولیس نے شہریوں سے اپیل کی کہ وہ اس ون ٹائم پیشکش سے فائدہ اٹھائیں۔

ساتھ ہی پولیس نے ماسک نہ لگاتے ہوئے گاڑی چلانے والوں پر عائد چالانات پر بھی بھاری رعایت دی ہے۔ اس رعایت کے تحت زیرالتواء چالانات کی رقم میں 50تا75فیصد چھوٹ دی گئی ہے۔ دو پہیوں والی گاڑیوں پر زیرالتواء چالانات کی رقم کا 75فیصد حصہ معاف کردیا گیا ہے۔

 گاڑی سواروں کو صرف 25 فیصد چالانات کی رقم ادا کرنی ہوگی۔ کورونا وائرس کی وباء کے دوران کئی گاڑی سواروں پر ماسک نہ لگانے پر جرمانے عائد کئے گئے تھے۔ ماسک نہ لگانے پر ہر گاڑی سوار پر ایک ہزار روپئے کا جرمانہ عائد کیاگیا تھا۔ اس رقم میں بھی 900روپئے کی رعایت دی جارہی ہے۔

زیرالتواء ماسک چالان پر صرف100روپئے ادا کرنے ہوں گے۔ زیرالتواء چالانات آن لائن کے ذریعہ ادا کرنے کی سہولت فراہم کی گئی۔ اس کے علاوہ فون پے‘ پے ٹی ایم ’گوگل پے کے ذریعہ بھی چالانات کی رقم ادا کی جاسکتی ہے۔

ٹووہیلر گاڑیوں اور تین پہیے والی گاڑیوں پر زیرالتواء چالانات کی مجموعی رقم پر صرف25فیصد ادا کرنی ہوگی جبکہ آرٹی سی بسوں کو70فیصد رعایت‘لائٹ موٹروہیکل‘ہیوی موٹر وہیکل پر50فیصد کی رعایت دی جارہی ہے۔