ہندوستانی کرکٹ کےلئے 2007ء ورلڈکپ کم ترین رہا

 افسانوی سچن تنڈولکر نے آج کہا کہ 2007ءورلڈکپ کا مرحلہ ہندوستانی کرکٹ کے لئے کم ترین رہا۔ تنڈولکر نے کہا کہ ہندوستانی کرکٹ کو 2007ءورلڈکپ کے پہلے ہی راﺅنڈ میں اخراج پر کئی تبدیلیوں کا سامنا رہا جو ویسٹ انڈیز میں کھیلا گیا تھا۔ تاہم اس اقدام سے زبردست فوائد بھی حاصل ہوئے۔ میرے خیال میں 2006 اور 2007 ہمارے لئے امکانی طور پر کم ترین مرحلہ رہا۔ ہم 2007ءورلڈکپ سوپر 8 مرحلے کے لئے کوالیفائی بھی نہ ہوسکے لیکن ہم وہاں سے واپسی کی اور نئی سونچ کے ساتھ آغاز کیا۔ ہم نے نئی سمت پر پیشقدمی شروع کردی۔ یہ بات دائیں ہاتھ کے سابق بیاٹسمین نے کہی۔ انہوں نے یہاں ایک پروگرام میں اس واقعہ کو یاد کیا۔ ہمیں کافی تبدیلیاں کرنی پڑی اور جیسے ہی ہم نے منصوبہ تیار کیا اور پھر ہمیں بحیثیت ٹیم کامیابی حاصل ہوئی۔ ہم اس کے لئے عزم کرچکے تھے اور اس کے بعد نتائج ظاہر ہوئے۔ 2007ءکرکٹ ورلڈ کپ جس میں ہندوستان کی قیادت راہول ڈراویڈ نے کی تھی۔ بنگلہ دیش اور سری لنکا سے گروپ مرحلہ میں شکست کھاگیا اس طرح اسے افتتاحی راﺅنڈ میں باہر ہونا پڑا۔ جس کے بعد ہمیں کئی تبدیلیاں کرنی پڑی۔ چاہےے وہ صحیح تھی یا غلط؟ ہمیں اس کا کوئی علم نہیں تھا۔ رات ہی رات میں تبدیلی نہیں ہوسکتی۔ ہمیں نتائج کے لئے انتظار کرنا پڑا۔ حقیقت یہ ہے کہ میرے لئے اپنے کیرئیر کے 21 برس خوبصورت ورلڈکپ ٹرافی حاصل کرنے میں لگے۔ یہ بات تنڈولکر نے کہی۔ تنڈولکر اس ہندوستانی اسکواڈ کا حصہ تھے جس نے 2011ورلڈکپ مہیندر سنگھ کی کپتانی میں جیتا تھا۔

جواب چھوڑیں