ملک کے تمام بچوں کے محفوظ ہونے تک چین سے نہیں بیٹھوںگا : ستیارتھی

نوبل امن انعام یافتہ کیلاش ستیارتھی نے آج کہا کہ ٹاملناڈو میں بچوں کے جنسی استحصال اور خرید و فروخت کا مسئلہ انتہائی تشویشناک ہے اور وہ اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیںگے جب تک کہ ملک کے بچے محفوظ نہ ہوجائیں ۔ مدراس ہائی کورٹ کی چیف جسٹس اندرا بنرجی کی موجودگی میں بھارت یاترا کو جھنڈی دکھاکر روانہ کرتے ہوئے کہا کہ میں اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھوںگا جب تک کہ اس ملک کے تمام بچے محفوظ نہ ہوجائیں ۔ اگر عصمت ریزی اور جنسی استحصال کا سلسلہ بند نہ ہو تو میں اپنی لڑائی بند نہیں کروںگا ۔ میں اس وقت تک چین سے نہیں سو سکتا جب تک کہ ہم عصمت ریزی اور استحصال کے خلاف اپنی جنگ نہ جیت لیں ۔ یہ اخلاقی وبا ہمارے ملک کا پیچھا کررہی ہے اور اب وقت آگیا ہے کہ ہم مل جل کر اس کا مقابلہ کریں ۔ انہوں نے کہا کہ اطلاعات کے مطابق پی او سی ایس او (POCSO) ایکٹ 2012 کے تحت ملک بھر میں جن معاملات کی اطلاع درج کرائی گئی ہے ، ان میں زائد از 10 فیصد کا تعلق ٹاملناڈو سے ہے ۔ 2015ءمیں POCSO کے تحت درج کرائے گئے 100 فیصد کیسس میں جرم کا ارتکاب کرنے والا شخص متاثرہ بچے کی جان پہچان والا تھا۔

 

جواب چھوڑیں