شمالی کوریا کے تازہ ترین مزائیل سے کوئی خطرہ نہیں: امریکہ

شمالی کوریا نے آج انٹرمیڈیٹ رینج بیالسٹک مزائیل جاپان کے اوپر سے بحرالکاہل پر داغا۔ یو ایس پیسیفک کمانڈ نے یہ بات کہی اور یقین ظاہر کیا کہ اس کے داغے جانے سے امریکہ کو کسی قسم کا خطرہ لاحق نہیں ہے۔ اپنے ایک بیان میں امریکی پیسیفک کمانڈ (پی اے سی او ایم) نے کہا کہ اس کی شناخت کی گئی اور اندازہ لگایا گیا۔ تجزیہ میں یہ ظاہر ہوا کہ واحد شمالی کوریائی بیالسٹک مزائیلکو سوائی ٹائم کے مطابق صبح 11:57کو لانچ کیا گیا۔ ابتدائی تجربہ میں یہ اشارہ ملا کہ درمیانی فاصلہ کا بیالسٹک مزائیل (آئی آر بی ایم) کو شمالی کوریا کے سنسان علاقہ سے لانچ کیا گیا جو مشرق کی جانب پرواز کرگیا۔ یہ بات کمانڈر ڈوے بن ہمیم ڈائرکٹر آف میڈیا آپریشن پی اے سی او ایم نے بتائی۔ بیالسٹک مزائیل شمالی جاپان کے علاقہ سے پرواز کرتا ہوا مشرقی جاپان کے بحرالکاہل میں جاگرا۔ ہم اس کا جائزہ اپنے بین ایجنسی شراکت دارں کے ساتھ لے رہے ہیں تاکہ مزید تفصیلات حاصل کی جاسکیں اور ہم عوام کو ضرورت پڑنے پر تازہ ترین تبدیلی کے بارے میں مطلع کریں گے۔ بینہیم نے یہ بات کہی۔ شمالی امریکی ایرواسپیس ڈیفنس کمانڈ (این او آر اے ڈی) نے کہا کہ بیالسٹک مزائیل سے شمالی امریکہ کو کسی قسم کا خطرہ نہیں ہے اور یہ بھی بتایا کہ گوام کو بھی مزائیل سے خطرہ لاحق نہیں ہے۔ اپنے حلیفوں کا دفاع کرنے کے عزم میں بشمول عوامی جمہوریہ کوریا اور جاپان ہیں۔ ان خطروں کا سامنا کرنے میں بالکل سخت موقف رکھتے ہیں۔ ہم نہ صرف خود کا بلکہ اپنے حلیفوں کا بھی دفاع کرنے ہنوز تیار ہیں چاہے ان کے خلاف کوئی اشتعال انگیزی یا حملہ کیا جائے۔

جواب چھوڑیں