”میں عوام کے خوابوں کی تکمیل کےلئے جیوں گا اور مروں گا“۔وزیراعظم نریندرمودی کا جذباتی خطاب

وزیراعظم نریندرمودی نے اتوار کے دن اپنی 67 ویں سالگرہ پر138 میٹر بلند بین ریاستی سردار سروورڈیم پراجکٹ کا افتتاح کیا جو دریائے نرمدا پر تعمیر ہوا ہے۔ انہوں نے اسے نیابھارت بنانے کے اپنے مشن سے جوڑا اور گرج دار آواز میں کہا کہ میں آپ کے خوابوں کے لئے جیوں گا، آپ کے خوابوں کے لئے مروں گا۔ وزیراعظم اپنی 80 سالہ ماں ہیرابا کا آشیرواد لینے کے بعد گاندھی نگر سے صبح لگ بھگ 9:15 بجے ڈیم کے مقام کیوڈیہ کالونی پہنچنے والے تھے لیکن خراب موسم کے باعث انہیں دبھوئی میں لینڈنگ کرکے ذریعہ کار کیوڈیہ کالونی پہنچنا پڑا۔ وہ زائد از ایک گھنٹہ تاخیر سے پہنچے۔ بی جے پی کے نرمدامہوتسو کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مودی نے کہا کہ مغربی ہند کی ریاستوں میں پانی کا بحران ختم کرنے سردار پٹیل کا خواب آج پورا ہوا جو میرے اور کئی دیگر لوگوں کے پیدا ہونے سے قبل دیکھاگیاتھا۔ انہوں نے کثیر مجمع سے جو توجہ سے ان کی بات سن رہا تھا ہندی میں کہا کہ ہندوستان میں صرف دو مہاپرش گذرے ہیں سردار پٹیل اور باباصاحب امبیڈکر ۔ اگر یہ دونوں مزید چندسال زندہ رہتے تو مغربی ریاستوں کو پانی مل چکا ہوتا اور ہندوستان ترقی کی راہ پر مزید پہلے چل پڑا ہوتا لیکن ہماری بدقسمتی رہی کہ ہم نے ان دونوں کو کھودیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومتیں ، اسکیمیں بناتی اور انہیں روبہ عمل لاتی ہیں۔ بعض اسکیموں کو مسائل کا سامنا بھی کرنا پڑتا ہے لیکن ماں نرمدا نے زیادہ سے زیادہ مشکلیں دورکردیں۔ ایک وقت ایسابھی آیاتھا جب پوری دنیا نے اسکیم کی مخالفت کی تھی۔ ورلڈ بینک نے ماحولیات کے بہانہ قرض روک دیاتھا لیکن گجرات کے عوام اٹھ کھڑے ہوئے۔ گجرات کے مندروں نے ڈیم کے لئے عطیات دئیے۔ مودی نے کہا کہ نرمدا کا پانی عام پانی نہیں ہے بلکہ یہ پارس ہے۔ (کہاجاتا ہے کہ پارس وہ پتھر ہوتا ہے جس کی رگڑ سے ہرچیز سونا بن جاتی ہے)۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے نرمدا ڈیم پر کبھی بھی سیاست نہیں کی کیونکہ یہ لاکھوں ماو¿ں کی پیاس بجھائے گا جو پانی کے لئے کئی کلومیٹر چلتی ہیں۔ قبائیلیوں کو دور دراز نقل مقام کرنا پڑتا ہے۔ پانی کی قلت سے دوچار علاقوں میں سرحد پرتعینات جوانوں، بے زبان مویشیوں اور غریب کسانوں کو سینکڑوں کلومیٹر بھٹکنا پڑتا ہے۔ مودی نے کہا کہ یہ میرے لئے جذباتی لمحہ ہے۔ میں سالگرہ نہیں مناتا لیکن آج وشواکرما جینتی ہے۔ آج ایک بیٹے کو لاکھوں ماو¿ں کا آشیرواد ملا ہے۔یہ حکومت کا یا بی جے پی کا پروگرام نہیں ہے بلکہ عوام کا جشن ہے۔ اس ڈیم میں استعمال سمنٹ کانکریٹ کی مقدار قابل تعریف ہے۔ 8کلومیٹر چوڑی سڑک کی تعمیر کے لئے درکار میٹرئیل، کشمیر تا کنیاکماری اور کانڈلہ تا کوہیما سے لایاگیا۔ سردارسروور پراجکٹ ، انجینئرنگ کا شاہکار ہے۔

جواب چھوڑیں