متحدہ ریاست میں اضلاع محبوب نگر اور نلگنڈہ ناانصافی کا شکار:چیف منسٹر کے سی آر

چیف منسٹرکے چندرشیکھرراﺅ نے کہاکہ کانگریس دورحکومت اورمتحدہ آندھراپردیش میں اضلاع محبوب نگر اور نلگنڈہ کے ساتھ شدید ناانصافی کی گئی ۔ آج سوریاپیٹ میں جونیئرکالج گراﺅنڈپر منعقدہ پرگتی سبھا (جلسہ عام ) سے خطاب کرتے ہوئے انہوںنے کہاکہ ناگرجناساگرپراجکٹ کوموجودہ مقام سے 19کیلومیٹر پیچھے تعمیر کرناچاہے تھا تاہم آندھرائی قائدین نے دھوکہ دیتے ہوئے پراجکٹ کے اصل مقام سے آگے تعمیر کرایا جس کی وجہ سے اضلاع محبوب نگر اور نلگنڈہ کے عوام زراعت اور پینے کے پانی کے لئے بحران سے دوچارہوگئے اوریہ علاقہ فلورائیڈ کے مسئلہ کی نذرہوگیا۔چیف منسٹر نے کہاکہ کانگریس دورحکومت میں فلورائڈمسئلہ کاحل دریافت کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے خود انہوں نے یاترانکالی تھی۔ انہوںنے کہاکہ اس یاتراکے وقت جب انہوںنے دیورکنڈا اورمنوگوڑوکادورہ کیاتھا‘ تب حالات کودیکھتے ہوئے ان کی آنکھ بھرآئی تھی۔ کے چندرشیکھر راﺅ نے کہاکہ ناگرجنا ساگر پراجکٹ کے دوکنال ہیں ایک لفٹ کنال تودوسری رائیٹ کنال ہے ۔ لفٹ کنال کے اخراجات حکومت برداشت کرتی تھی اور رائیٹ کنال کے اخراجات کسانوں سے وصول کیئے جاتے تھے ۔ حکومت کے اس اقدام کے خلاف انہوں (کے سی آر)نے احتجاج منظم کیاتھا جس کے بعد اس وقت کے حکمرانوں کو مجبوراً رائیٹ کنال کے اخراجات بھی حکومت کی جانب سے برداشت کرنے کا اعلان کرنا پڑا تھا۔ کے چندرشیکھرراﺅ نے کہاکہ کانگریس قائدین نے کبھی بھی ان ناانصافیوں کے خلاف آواز بلندکرنا ضروری نہیں سمجھا ہمیشہ خاموش تماشائی کا کردارادا کرتے رہے تاہم تشکیل تلنگانہ کے بعد یہ سب باتیں ماضی کا حصہ بن چکی ہیں۔ اب ریاست میں تمام اضلاع کی یکساںترقی کے لئے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ حکومت فلورائڈکے مسئلہ کا مستقل حل دریافت کرنے کےلئے کوشاں ہے ۔ ضلع نلگنڈہ ‘سوریاپیٹ میں پینے کے پانی اور زراعت کےلئے ایک ایک ایکر اراضی کو سیراب کرنے کے اقدامات کئے جار ہے ہیں۔ قبل ازیں چیف منسٹر کے ہاتھوں ضلع سوریاپیٹ کے چیوملہ منڈل کے چندوپٹلہ دیہات میں مشن بھاگیرتا کے تحت 60 دیہاتوں کو پینے کے پانی کی سربراہی کے لئے تعمیرکردہ واٹرٹریٹمنٹ پلانٹ کا افتتاح عمل میںآیااورقرعہ اندازی کے ذریعہ منتخب کردہ 192 افراد میں ڈبل بیڈروم مکانات کے پٹہ جات حوالہ کیئے گئے ۔ اس موقع پرریاستی وزراءٹی ناگیشورراﺅ ‘ جی جگدیش ریڈی ‘اے اندرا کرن ریڈی ‘ اراکین اسمبلی وکونسل کے علاوہ عوام کی بڑی تعداد موجودتھی۔ نمائندہ سوریاپیٹ کے بموجب قبل ازیںچیف منسٹر کے چندر شیکھرراﺅ نے 80کروڑ کی لاگت سے تعمیر ہونے والے کلکٹریٹ کامپلکس ‘40لاکھ روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والی ایس پی آفس عمارت کاسنگ بنیادر کھا ۔ انہوں نے چیوملہ میں 400کے وی سب اسٹیشن کا بھی افتتاح کیا۔ پی ایس آرسنٹرس پر جے سی گپتا کے مجسمہ کی نقاب کشائی کے بعد چیف منسٹر نے کہاکہ ان کی حکومت سوریاپیٹ کی ترقی کےلئے ایک سوکروڑ روپے جاری کرے گی۔ چیف منسٹر مقررہ وقت سے ڈیرگھنٹہ تاخیر سے پہنچے۔ ہیلی پیاڈپر وزراءجی جگدیش ریڈی ‘ ٹی ناگیشورراﺅ‘ پوچارم سرینواس ریڈی ‘ ضلع کلکٹر سریندر موہن اوردیگر نے کے سی آر کا خیرمقدم کیا۔

جواب چھوڑیں