مرکز۔ ریاستوں کے مابین تال میل بنانے میں گورنروں کا اہم رول: رام ناتھ کووند

صدر جمہوریہ ہندنے آج راشٹرپتی بھون میں گورنروں کی 48 ویں کانفرنس کا افتتاح کیا۔ اس کانفرنس میں ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے 27 گورنر اور 3 لفٹننٹ گورنرس شرکت کررہے ہیں۔ مرکزی انتظام والے علاقوں دادر اور نگر حویلی ، دمن اور دیو نیز لکشا دیپ کے ایڈمنسٹریٹر بھی کانفرنس میں خصوصی مدعوین کی حیثیت سے شرکت کررہے ہیں۔ صدر جمہوریہ نے اپنے افتتاحی خطبے میں کہا کہ اس کانفرنس میں شرکت سے گورنروں اور لفٹننٹ گورنروں کو یہ ایک اچھا موقع ملا ہے کہ وہ اہم مسائل پر تبادلہ خیال کرسکیں اور اپنی اپنی ریاستوں کے تجربات میں دوسروں کو شامل کرسکیں۔ انہوں نے کہا کہ گورنر مرکزی حکومت اور ریاستوں کے درمیان ایک پل کا کام کرتے ہیں۔آئین کے تحفظ اور اس کی برقراری نیز عوام کی خدمت اور فلاح و بہبود کے لئے خود کو وقف کرنے کے لئے گورنروں پر جو ذمہ داری عائد ہوتی ہے وہ کوآپریٹیو وفاق میں اور زیادہ واضح ہوجاتی ہے۔ صدر جمہوریہ نے کہا کہ 2022 میں آزادی کے 75 سال مکمل ہونے کے سلسلہ میں بڑے اہم اور قومی نوعیت کے نشانے مقرر کئے گئے ہیں۔ اس وقت کے آنے میں اب صرف پانچ سال باقی ہیں اور حکومت ہند نے ایک ایسے معاشرے کی تعمیر کا عزم کیا ہے جو محفوظ اور مستحکم اور خوشحال ہو اور جس میں سب کے لئے مواقع کو یقینی بنایاجائے اور جو سائنس اور ٹکنالوجی کے میدان میں قائدانہ رول ادا کرے۔ اس کام کے حجم کو دیکھتے ہوئے ضروری ہے کہ پورا ملک متحد ہوکر ایک ہی مقصد کے ساتھ کام کرے۔ 2017 سے 2022 تک کا پانچ سال کا وقفہ نئے ہندستان کی تشکیل کے لئے وقف کیا جانا چاہئے۔

جواب چھوڑیں