ہماچل میں 9 نومبر کو اسمبلی انتخابات‘ 18 دسمبر کو نتائج

ہماچل پردیش اسمبلی انتخابات کی سبھی 68نشستوں کے لئے انتخابات ایک ہی مرحلہ میں 9 نومبر کو ہوں گے اور نتائج کا اعلان 18دسمبر کو کیا جائے گا۔ چیف الیکشن کمشنر اے کے جیوتی نے آج یہاں پریس کانفرنس میں بتایا کہ ہماچل پردیش اسمبلی انتخابات کے لئے نوٹیفکیشن 16 اکتوبر کو جاری کی جائے گی۔ امیدوار 23 اکتوبر تک پرچہ نامزدگی داخل کرسکیں گے اور 24 اکتوبر کو پرچہ نامزدگی کی جانچ کی جائے گی اور 26 اکتوبر تک نام واپس لئے جا سکیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست میں کل 7521پولنگ مرکز بنائے جائیں گے اور سبھی الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم)کے ساتھ وی وی پیٹ کا استعمال کیا جائے گا جس سے ووٹر یہ دیکھ سکیں گے کہ انہوں نے جس امیدوار کے نام کا بٹن دبایا ہے ووٹ اسی کو ملا ہے۔انہوں نے کہا کہ سبھی 68سیٹوں پر ایک ایک پولنگ مرکز کے وی وی پیٹ سے نکلنے والی پرچیوں کی بھی گنتی کی جائے گی اور اسے اس پولنگ مرکز پر پڑے ووٹوں سے ملایا جائے گا۔پی ٹی آئی کے بموجب ہماچل پردیش اسمبلی کی میعاد 7 جنوری 2018 کو اورگجرات اسمبلی کی میعاد 22 جنوری کو ختم ہورہی ہے ۔چیف الیکشن کمشنر اے کے جوتی نے ہماچل پردیش کے لئے انتخابی شیڈول کا اعلان کرتے ہوئے کہاکہ مثالی ضابطہ اخلاق فوری طورپر نافذ ہورہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ مثالی ضابطہ اخلاق کا ہماچل پردیش اور ریاست سے متعلق مرکزی حکومت کے معاملات پر بھی نفاذہوگا۔ ہماچل پردیش میں گزٹ اعلامیہ کی اجرائی کی عمل 23 اکتوبر سے شروع ہوگا جس کے بعد امیدوار نامزدگیاں داخل کرنا شروع کرسکتے ہیں ۔جوتی نے جن کے ہمراہ الیکشن کمشنرس او پی راوت اور سنیل اروڑہ بھی تھے‘ کہا کہ نامزدگیاں داخل کرنے کی آخری تاریخ 23 اکتوبر ہوگی۔ 24 اکتوبر کو جانچ پڑتال کے بعد نامزدگی واپس لینے کی آخری تاریخ 26 اکتوبر مقرر کی گئی ہے۔ گوا کے بعد ہماچل پردیش وہ دوسری ریاست ہوگی جہاں 100 فیصد VVPAT کوریج ہوگا۔ تمام 7521 پولنگ اسٹیشنوں میں الکٹرانک ووٹنگ مشینوں کے ساتھ پیپر ٹریل مشینیں بھی نصب کی جائیں گی۔ ان میں 42 مددگار پولنگ اسٹیشنس بھی شامل ہیں جو دوردراز مقامات پر واقع ہیں۔ جوتی نے کہا کہ 68 اسمبلی حلقوں میں ایک ایک پولنگ بوتھ کی VVPAT مشینوں کا الکٹرانک ووٹنگ مشینوںکے ساتھ تقابل کیا جائے گا تاکہ ووٹوں کی گنتی کی جانچ پڑتال کی جاسکے۔

جواب چھوڑیں