جئے کی کمپنی میں کرپشن کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا : امیت شاہ

بی جے پی کے صدر امیت شاہ نے آج بتایا کہ ان کے لڑکے جئے امیت شاہ کی کمپنی میں کرپشن کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ہے۔ وہ نیوز پورٹل دی وائر میں پیش کردہ رپورٹ کا حوالہ دے رہے تھے ، جس میں یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ جے کی کاروباری دولت بی جے پی کے 2014ءمیں برسراقتدار آنے کے بعد تیزی سے بڑھ گئی ہے۔ شاہ نے نیوز چینل آج تک کے منعقدہ پروگرام کے دوران بتایا کہ جے کی کمپنی میں کرپشن کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ہے۔ بی جے پی کے سربراہ نے کانگریس پر بھی کڑی تنقید کی ، جس پر ان پر حملے اور ساتھ ہی ساتھ وزیر اعظم نریندر مودی پر تنقید کی رپورٹ کو بڑے اشتیاق سے استعمال کیا ہے۔ کانگریس کو کرپشن کے متعدد الزامات کا سامنا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ کانگریس کو متعدد کرپشن الزامات کا سامنا رہا ہے ۔ کیا انہوں نے کبھی بھی مجرمانہ اہانت کا مقدمہ دائر کیا یا دیوانی ازالہ¿ حیثیت ِ عرفی مقدمہ دائر کیا ، جس کی مالیت 100 کروڑ روپئے ہوتی ہے۔ آخر کانگریس اس قسم کے مقدمات دائر کرنے کی حیثیت کیوں نہیں رکھتی ہے ؟ جئے نے ازالہ¿ حیثیت ِ عرفی مقدمہ دائر کیا ہے۔ اس نے عدالت سے رجوع ہوتے ہوئے تحقیقات کی مانگ کی ہے۔ اب آپ حقائق کے ساتھ عدالت سے رجوع ہوسکتے ہیں۔ کانگریس نے اس معاملہ کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ، تاہم بی جے پی نے اس مضمون یا رپورٹ کو توہین آمیز قرار دیا ۔ 9 اکتوبر کو شاہ نے احمد آباد کی ایک میٹرو پولیٹن عدالت میں نیوز چینل دی وائر کے خلاف فوجداری ازالہ¿ حیثیت ِ عرفی مقدمہ دائر کیا۔ اپنی درخواست میں انہوں نے انہیں بدنام کرنے ان کی شہرت کو مضمون کے ذریعہ دھکہ پہنچانے کے خلاف فوجداری کارروائی کی التجا کی ، جب کہ یہ مضمون یا رپورٹ رسوا کن ، اوچھی ، گمراہ کن تحقیری اہانت آمیز اور متعدد توہین آمیز بیانات پر مبنی ہے۔

 

جواب چھوڑیں