راجیہ سبھا کی کارروائی مسلسل آٹھویں دن ملتوی

راجیہ سبھا کی کارروائی آج مسلسل آٹھویں دن اپوزیشن اور این ڈی اے کی حلیف ٹی ڈی پی ارکان کی ہنگامہ آرائی کے دوران ضائع ہوگئی ۔ راجیہ سبھا ارکان ، مختلف مسائل جیسے ہندوستان کے سب سے بڑے12700کروڑ روپئے کے بینک فراڈ ، آندھرا پردیش کو خصوصی موقف اور کاویری آبی تنازعہ پر احتجاج کررہے تھے۔ ایوان کی کارروائی شروع ہونے کے فوری بعد دو بجے دن تک ملتوی کردی گئی ۔ دو بجے دن کارروائی کے آغاز کے کچھ ہی دیر بعد ہنگامہ آرائی کے مناظر جاری رہنے پر کرسی صدارت نے کارروائی دن بھر کے لیے ملتوی کردی ۔ اپوزیشن ارکان دو بجے دن ایوان کی کارروائی کے دوبارہ آغاز پر وسط میں پہنچ گئے اور پلے کارڈس دکھاتے ہوئے ’’بی جے پی ہٹاؤ ، دیش بچاؤ‘‘ کے نعرے لگانے لگے ۔ شور و غل کے دوران نائب صدرنشین پی جے کورین نے جو کرسی صدارت پر فائز تھے ، سکریٹری جنرل کو ہدایت دی کہ وہ لوک سبھا سے موصولہ ایک پیام پڑھ کر سنائیں۔ راجیہ سبھا کے سکریٹری جنرل نے شور و غل کے دوران ایوان کو فینانس اور تصرفات بل کی ایوانِ زیریں میں منظوری سے واقف کرایا۔ شور و غل کے ساتھ احتجاج جاری رہنے پر کورین نے کارروائی دن بھر کے لیے ملتوی کردی ۔

جواب چھوڑیں