عوام نے ترقی کے بجائے ذات کو ووٹ دیا۔ بی جے پی ترجمان کا بیان

گورکھپور اور پھول پور لوک سبھا حلقوں میں ضمنی انتخابات میں اپنی شکست قبول کرتے ہوئے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے آج کہا کہ عوام نے ترقی کے مقابل ذات پات کے لیے ووٹ دیا ہے۔ واضح رہے کہ سماج وادی پارٹی نے دونوں حلقوں میں اپنی سبقت برقرار رکھی ہے اور ووٹوں کی گنتی ہنوز جاری ہے۔ بی جے پی ترجمان چندر موہن نے بتایا کہ نتائج انتہائی بدبختانہ ہیں ، ضمنی انتخابات ‘ ترقی اور ذات پات کے درمیان مقابلہ تھے اور ایک بار پھر ذات کی جیت ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کو سبق ملا ہے اور وہ اس شکست کے پس پردہ وجوہات کا جائزہ لے گی۔ انہوں نے اس بات کا اعتراف کرتے ہوئے کہ انتخابات میں ہار اور جیت ایک ہی سکہ کے دو رخ ہیں اور کسی کو بھی اپنی شکست پر شرمانا نہیں چاہئے ، کہا کہ ہم اپنی کوتاہیوں کا جائزہ لیںگے، جن کی وجہ سے ہمیں شکست ہوئی ہے اور 2019 ء کے لوک سبھا انتخابات سے پہلے انہیں دور کریںگے۔ بہرحال بی جے پی ترجمان نے کہا کہ ضمنی انتخابات میں شکست کا پارٹی کی شبیہ پر بہت کم اثر پڑتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اترپردیش کی بی جے پی حکومت جاریہ ہفتہ کے اواخر میں اپنا ایک سال مکمل کرے گی ۔ وعدوں کی تکمیل کے لیے بی جے پی کی میعاد مکمل ہونے میں ہنوز چار سال باقی ہیں ۔ بی جے پی ابھی بھی ریاست کی اسی لوک سبھا نشستوں کے منجملہ 71 کی نمائندگی کرتی ہے۔

جواب چھوڑیں