محبوب نگر سے غریبوں کی نقل مقامی کوروکنے کاعزم:ہریش رائو

حکومت تلنگانہ ‘ضلع محبوب نگر (سابق ضلع) کوترقی کی راہ پر گامزن کرنے خشک سالی کے حالات سے نجات دلانے کے ساتھ ساتھ اس ضلع سے مزدوروں اور بافندوںکی نقل مقامی کوروکنے کی عہدکی پابند ہے ۔ ریاستی وزیر آبپاشی ٹی ہریش رائو نے جمعرات کے روز کلواکرتی لفٹ اریگیشن کے کنال کاموں کا معائنہ کرنے کے بعد یہ بات کہی۔ انہوں نے کہاکہ کلواکرتی لفٹ اریگیشن پراجکٹ میں پانی کے ذخیرہ کی گنجائش 27ٹی ایم سی رہے گی اور اس پراجکٹ کے کاموں کو بہت جلد مکمل کرلیاجائے گا جب پراجکٹ کے کام مکمل ہوجائیں گے تب اس سے 3لاکھ ایکر اراضی کوسیراب کیاجاسکے گا۔ ضلع ناگر کرنول میں کنال کے تعمیری کاموں کا معائنہ کرنے کے بعد ہریش رائو نے کہاکہ حکومت نے سابق ضلع محبوب نگر میں انسداد خشک سالی کے اقدامات کاآغاز کردیا ہے اور حکومت چاہتی ہے کہ اس ضلع سے کسان ‘بافندے اور دیگر غریب افراد ‘روزگار کے لئے کسی دوسرے ضلع کونقل مقام نہ کریں۔ اس سلسلہ میں حکومت مناسب اقدامات کررہی ہے ۔ حکومت پراجکٹوں کی تعمیر‘تالابوںاور جھیلوں کی مرمت اوران کے احیاء یادوبرادری میں بھیڑبکریوں کے یونٹوں کی تقسیم اورماہی گیروں میں فش سیڈنس تقسیم کرتے ہوئے دیہی معیشت کوفروغ دینے کی کوشش کررہی ہے ۔ انہوں نے سابق ضلع محبوب نگر کی پسماندگی کے لئے پیش رو حکومتوں کوذمہ دار قرار دیا اورکہاکہ سابق حکومتوں کی ناقص پالیسیوں اورعدم توجہ کے باعث ضلع محبوب نگر پسماندگی کاشکار ہوگیا ۔ کانگریس اورتلگودیشم کی سابق حکومتوں نے تلنگانہ کونظرانداز کردیاتھا اور علاقہ کے آبپاشی نظام کو تباہ کردیاتھا۔ انہوںنے الزام عائد کیا کہ کانگریس نے سابق میں بھی محبوب نگر کی ترقی کے لئے کچھ نہیں کیاہے اور اب بھی کانگریس پارٹی ضلع کے بشمول ریاست بھر میں آبپاشی پراجکٹوں اور ترقیاتی کاموں میں رکاوٹیں پیدا کررہی ہیں۔ حکومت تلنگانہ تمام پراجکٹوں کومکمل کرے گی۔

جواب چھوڑیں