بی جے پی کی درخواست پر سپریم کورٹ کا 9؍ اپریل کو فیصلہ

 سپریم کورٹ نے آج کہا کہ مغربی بنگال بی جے پی کی درخواست جس میں الزام عائد کیا گیا کہ آئندہ ماہ منعقد ہونے والے پنچایتی انتخابات کے لیے اس کے امیدواروں کو پرچہ نامزدگیوں کے ادخال کی اجازت نہیں دی جارہی ہے کا فیصلہ 9 اپریل کو کرے گی۔ بی جے پی نے درخواست میں نامزدگیوں کی آخری تاریخ جو 9؍ اپریل ہے میں توسیع کی استدعا کی اور نامزدگیاں آن لائن داخل کرنے کی اجازت طلب کی ۔ جسٹس آر کے اگروال اور جسٹس اے ایم سپرے پر مشتمل بنچ نے کہا کہ وہ اپنا فیصلہ 9؍ اپریل تک محفوظ کردیے ہیں۔ بی جے پی کی پیروی کرنے والے سینئر ایڈوکیٹ مکل روہتگی نے دورانِ سماعت کہا کہ ریاست میں جمہوریت کا قتل کیا جارہا ہے ، کیوںکہ امیدواروں کو نامزدگیاں داخل کرنے کی اجازت نہیں دی جارہی ہے اور بڑے پیمانہ پر تشدد ہورہا ہے۔ مغربی بنگال پنچایت راج انتخابات کا یکم ، 3 اور 5 مئی کو انعقاد اور 8 مئی کو رائے شماری مقرر ہے۔ نامزدگیاں داخل کرنے کی آخری تاریخ 9 اپریل اور تنقیح کی آخری تاریخ 11 ؍ اپریل مقرر ہے۔ درخواست میں الزام عائد کیا گیا کہ بلاک ڈیولپمنٹ آفیسرس جنہیں ریاستی الیکشن کمیشن نے اسسٹنٹ پنچایت الیکٹورل رجسٹریشن آفیسرس مقرر کیا ہے بی جے پی کے امیدواروں کو نامزدگی فارمس دینے سے انکار کررہے ہیں۔ مغربی بنگال اسٹیٹ الیکشن کمیشن فہرست ِ رائے دہندگان کی تیاری اور انتخابات کے انعقاد کا مجاز ہے ، جو پنچایتوں اور بلدیات کے انتخابات منعقد کرتا ہے۔

جواب چھوڑیں