جنسی تعلقات کو منظر عام پر نہ لانے اداکارہ کو 130,000ڈالر کی ادائیگی

امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے آج یہاں کہا ہے کہ وہ اس بات سے واقف نہیں ہیں کہ ان کے اٹارنی نے اڈلٹ فلم اسٹار اسٹورمی ڈینلس کو 130,000امریکی ڈالر ادا کئے تھے تاکہ وہ ان کے اور فلم اسٹار کے درمیان تعلقات کو منظر عام پر لانے سے روکا جاسکے۔ صدر امریکہ نے آج یہاں اخباری نمائندوں کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے مزید بتایا ہے کہ فحش فلموں کی اداکارہ اسٹورمی ڈینلس کو کوئی رقم دئیے جانے سے وہ لا علم ہیں۔ اس اداکارہ نے الزام عائد کیا ہے کہ صدر امریکہ کے ساتھ اس کے تعلقات رہے ہیں اور وہ اس کو منظر عام پر نہ لائے جانے کی کوشش کرتے ہوئے رقومات ادا کرنے کی پیشکش کرتے رہے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ صدارتی انتخابات کے دوران جبکہ مذکورہ اداکارہ‘ ڈونالڈ کے ساتھ اپنے افیرس کو منظر عام پر لانے کی کوشش کرتی رہی ہیں لیکن صدر امریکہ نے مذکورہ اداکارہ کی جانب سے عائد کردہ الزامات کو مسترد کردیا۔ انہوں نے کہا ہے کہ اٹارنی جنرل کی جانب سے رقم کی ادائیگی سے وہ واقف نہیں ہیں۔ اخباری نمائندوں کے اس سوال پر کہ آیا اسٹورمی ڈینلس کو مذکورہ رقم ادا کی گئی ہے تو انہوں نے کہا کہ وہ لا علم ہیں جبکہ اداکارہ کا ادعا ہے کہ ٹرمپ کے ساتھ ان کے تعلقات رہے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ یہ رقم اٹارنی مائیکل کورین کی جانب سے ادا کی گئی تھی۔ 2016میں جبکہ صدارتی انتخابات ہورہے تھے اس موقع پر اسٹارمی ڈینیل کو ڈونالڈ ٹرمپ کے ساتھ افیرس کو منظر عام لانے سے بعض رکھنے کیلئے یہ رقم دی گئی تھی لیکن ڈونالڈ ٹرمپ نے ان الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ رقم کی ادائیگی کے تعلق سے جو کچھ کہا جارہا ہے اس سے وہ واقف نہیں ہیں۔ انہوں نے اداکارہ کے ساتھ کسی قسم کے تعلقات اور افیرس کے تعلق سے الزامات کی تردید کی اور کہا کہ اس طرح کے الزامات گمراہ کن ہیں۔ حال ہی میں ایک انٹرویو دیتے ہوئے اسٹورمی ڈینیل نے ادعا کیا تھا کہ انہیں رقومات کی ادائیگی کی گئی تاکہ ڈونالڈ ٹرمپ کے ساتھ جنسی تعلقات کو منظر عام پر لانے سے روکا جاسکے۔ ڈینیلس جس کا نام اسٹیفن کیلیفورڈ ہے کہا کہ اگرچیکہ صدرامریکہ ان کے ساتھ جنسی تعلقات کو مسترد کرتے ہیں لیکن وہ اب بھی یہ کہتی ہیں کہ ڈونالڈ ٹرمپ کے ساتھ ان سے جنسی تعلقات رہے ہیں۔

جواب چھوڑیں