سعودی عرب کے سینما گھروں میں دکھائی جانے والی پہلی فلم

سعودی عرب میں 18 اپریل سے سینما گھروں کی سرگرمیاں بحال ہو رہی ہیں۔ اس موقع پر مملکت کے سینماؤں میں سب سے پہلے جو فلم پیش کی جائے گی وہ سیاہ چیتا ہے۔یہ فلم الریاض شاہ عبداللہ مالیاتی مرکز میں دکھائی جائے گی۔ اس سینما میں 620افراد کے بیٹھنے کی گنجائش موجود ہے۔ اس کے ساتھ ہی سعودی عرب میں کئی سالوں کے بعد سینما کی سرگرمیوں کے باقاعدہ جشن کا آغاز ہو جائے گا۔یہ فلم ’چالا‘ یاہ چیتے کے گرد گھومتی ہے۔ اس کا کردار ’چاڈویک بوزمان‘ ادا کریں گے۔ چالا مستقبل میں افریقا کے ’واکنڈا’ نامی ملک کی نئی ملکیت ہو گا جو کہ کہ قبائل پر مشتمل ہو گا۔فلم میں جنگجو کا کردار ادا کرنے والی ادارکارہ لوبیتا نیونجو کا کہنا ہے کہ انہیں توقع ہے کہ یہ فلم افریقا کے بارے میں عمومی تاثر کو تبدیل کرنے میں اہم کردار ادا کرے گی۔ عام تاثر یہ ہے کہ افریقا ایک غریب ملک ہے مگر اس فلم میں افریقا کو دولت مند دکھایا جائے گا اور اس کی طرف سفر کی ترغیب دی جائے گی۔ خیال رہے کہ امریکی فلم ساز کمپنی ’AMC‘ وہ پہلی غیرملکی کمپنی جسے سعودی عرب میں اپنی فلمیں نمائش کے لیے پیش کرنے کا اجازت نامہ جاری کیا گیا ہے۔ یہ کمپنی آئندہ پانچ سال کے دوران سعودی عرب میں 40 سینما ہاؤس بھی تعمیر کرے گی۔

جواب چھوڑیں