راہول گاندھی کا سدبھاؤنا اُپواس

ذات پات کے تشدد ‘ فرقہ پرستی اور پارلیمنٹ کی کارروائی نہ چلنے کے خلاف کانگریس صدر راہول گاندھی نے آج اپنی پارٹی کے ملک گیر ایک روزہ برت (بھوک ہڑتال) کی قیادت کی۔ راہول گاندھی ‘ راج گھاٹ پر کئی گھنٹے بیٹھے رہے۔ سینئر قائدین بشمول کمل ناتھ ‘ ملیکارجن کھڑگے‘ شیلا دکشت‘ اشوک گہلوت ‘ صدر دہلی پردیش کانگریس اجئے ماکن اور پارٹی کے کمیونیکیشن انچارج رندیپ سنگھ سرجے والا نے ان کا ساتھ دیا۔ آج کے ’’سدبھاؤنا اُپواس‘‘ (بھوک ہڑتال برائے فرقہ وارانہ ہم آہنگی) پر 1984 کے مخالف سکھ فسادات کا اثر دیکھا گیا۔ سجن کمار اور جگدیش ٹائٹلر کو جن کا ان فسادات میں مبینہ رول ہے‘ راہول گاندھی کے اسٹیج سے دور رہنے کے لئے کہا گیا۔ سجن کمار تھوڑی دیر بعد وہاں سے چلے گئے جبکہ جگدیش ٹائٹلر نے پارٹی ورکرس کے ساتھ بیٹھنا پسند کیا۔ مہاتما گاندھی کی یادگار (راج گھاٹ) پر ہڑتال کو کانگریسیوں نے تمام ریاستوں اور ضلع مستقروں پر دُہرایا۔ پارٹی قائدین کا کہنا ہے کہ سدبھاؤنا اُپواس بی جے پی کی فرقہ پرست سیاست اور پارلیمنٹ نہ چلنے دینے کے خلاف بھی ہے۔ کانگریس ‘ پارلیمنٹ میں قومی اہمیت کے حامل مختلف مسائل جیسے پی این بی اسکام‘ سی بی ایس ای پیپر افشا‘ ایس سی / ایس ٹی ایکٹ ‘ آندھراپردیش کو خصوصی موقف اور کاویری واٹر مینجمنٹ بورڈ کے قیام پر بحث چاہتی تھی۔ رندیپ سنگھ سرجے والا نے اخباری نمائندوں سے کہا کہ یہ نظریات اور اقدار کی لڑائی ہے جن کی نمائندگی ہندوستان کرتا ہے۔ ہم ووٹوں کے لئے نفرت کی سیاست اور تفرقہ پسندی کی اجازت نہیں دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کی موجودہ حکومت نے پھوٹ ڈالو اور راج کرو کی انگریزوں کی پالیسی اپنا رکھی ہے۔ سماج میں پھوٹ ڈالنا ‘ مذاہب کے درمیان ٹکراؤ ‘ برادریوں میں پھوٹ ڈالنا ‘ مختلف ذاتوں میں پھوٹ ڈالنا مودی حکومت کے ڈی این اے میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو مذہبی خطوط پر تقسیم کرچکی حکومت اب اسے دلت اور غیردلت میں بانٹنا چاہتی ہے۔ ہندوستان کی آزادی کے لئے لڑائی لڑنے والی پارٹی کانگریس کا فرض بنتا ہے کہ وہ بھائی چارہ‘ پیار اور ایک دوسرے کا احترام یقینی بنائے۔ سجن کمار اور جگدیش ٹائٹلر پر تنازعہ کے بارے میں پوچھنے پر سرجے والا نے کہا کہ بی جے پی کے بعض سازشی ہر چھوٹی بڑی چیز میں کچھ نہ کچھ ڈھونڈنے کی کوشش میں رہتے ہیں۔ یو این آئی کے بموجب کانگریس صدر راہول گاندھی نے بی جے پی کی تفرقہ پسند سیاست اور این ڈی اے حکومت کے مخالف دلت رویہ کے خلاف ملک گیر بھوک ہڑتال کی قیادت کی۔ انہوں نے راج گھاٹ پر سدبھاؤنا اُپواس میں حصہ لیا۔ اُپواس شروع کرنے سے قبل کانگریس صدر نے بابائے قوم مہاتما گاندھی کو خراج عقیدت ادا کیا۔ جگدیش ٹائٹلر اور سجن کمار کی اسٹیج پر موجودگی پر معمولی تنازعہ ہوا۔ کانگریس کے بعض ورکرس نے ان کی موجودگی پر اعتراض کیا جس پر صدر دہلی پردیش کانگریس اجئے ماکن نے ان دونوں کو وہاں سے چلے جانے کو کہا ۔ بی جے پی ارکان پارلیمنٹ 12 اپریل کو ایک روزہ بھوک ہڑتال کرنے والے ہیں۔

جواب چھوڑیں