شام میں مبینہ کیمیائی حملہ،عالمی برداری کا شدید ردعمل

شامی علاقے مشرقی غوطہ میں باغیوں کے زیر قبضہ شہر دوما میں ہوئے مبینہ کیمیائی حملے پر عالمی برداری نے شدید ردعمل ظاہر کیا ہے۔ یورپی یونین، برطانیہ، فرانس اور امریکہ کے علاوہ کیتھولک مسیحیوں کے روحانی پیشوا پوپ فرانسس نے بھی اس حملے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ یورپی یونین نے روس پر زور دیا ہے کہ وہ شام پر اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے اور مستقبل میں ایسے حملوں کے تدارک کی کوشش کرے۔ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے اس مبینہ حملے کے لیے روس اور ایران کو قصوروار قرار دیا ہے۔ ہفتہ کو ہوئی اس کارروائی کے نتیجے میں 49 افراد ہلاک ہوئے تھے۔امریکی صدر نے ٹویٹ میں شام کے صدر بشار الاسد اور ان کے اتحادیوں روس اور ایران کو تنقید کا نشانہ بنایا۔بی بی سی کے مطابق توقع ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل پیر کو ممکنہ طور پر اس معاملہ پر بحث کرے گی۔

جواب چھوڑیں