اقتصادی راہداری سے چین ۔پاک دوستی مزید مستحکم : شی جنپنگ

پاکستانی وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور چین کے صدر شی جن پنگ نے پاک چین اقتصادی راہداری کے ذریعے دونوں ملکوں کے تعلقات کو نئی بلندیوں تک لے جانے کا اعادہ کیا ہے۔ چینی صدر کا کہنا تھا کہ سی پیک کے تحت بننے والے انڈسٹریل پارکس پاکستان میں ترقی کی نئی راہیں کھولیں گے۔اسلام آباد میں وزیر اعظم آفس کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق، وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اس وقت چین میں موجود ہیں جہاں انہوں نے باؤ کانفرنس میں شرکت کی جب کہ باؤ گیسٹ ہاؤس میں پاکستانی وزیر اعظم اور چینی صدر کے درمیان ملاقات ہوئی۔ملاقات کے بعد جاری اعلامیہ کے مطابق، وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ پاکستان چین کا گہرا دوست ہے اور چین پاکستان اقتصادی راہداری سے یہ دوستی مزید مستحکم ہوئی ہے جب کہ پاکستان اقتصادیات، توانائی، زراعت، بنیادی ڈھانچے اور افرادی قوت کے شعبوں میں چین کے ساتھ تعاون کو فروغ دینے کا خواہاں ہے۔اس موقع پر عالمی امن و سلامتی میں چین کے کردار کو سراہتے ہوئے وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان عالمی امور میں چین کے ساتھ تعاون مضبوط بنانے کا خواہشمند ہے، جب کہ سی پیک 21 ویں صدی میں عالمی ترقی کیلئے بین الاقوامی منصوبہ بن گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ چین کی اصلاحات اور آزادانہ پالیسی سے کسی ملک کو خطرہ نہیں۔اعلامیہ کے مطابق، چین کے صدر شی جن پنگ کا کہنا تھا کہ آج علاقائی اور بین الاقوامی صورتحال میں تیزی سے تبدیلیاں آرہی ہیں۔ پاکستان اور چین کے درمیان قریبی دوستانہ تعلقات انتہائی اہمیت اختیار کرگئے ہیں۔چینی صدر نے کہا کہ چین پاکستان کے ساتھ اپنے تعلقات کو نئی بلندیوں تک لے جانا چاہتا ہے، جو ایک خطہ ایک شاہراہ منصوبے کے تحت دوطرفہ تعاون کی ایک عظیم مثال ہوگی۔چینی صدر نے گوادر بندرگاہ صنعتی زونز اور بجلی گھروں سمیت سی پیک کے تحت ترقیاتی منصوبوں کی تکمیل میں چین کے مکمل تعاون کا یقین دلایا۔وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے باؤ کانفرنس کے دوران سائیڈ لائن ملاقاتوں میں اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انٹانیو گوٹیرز سے بھی ملاقات کی، جبکہ آسٹریا کے چانسلر سباسٹین کرز سے بھی ملاقات کی۔وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے دورہ میں ایک اہم ملاقات معروف کاروباری ویب سائیٹ، ’علی بابا‘ کے مالک، جیک ما کے ساتھ بھی تھی جس میں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے علی بابا گروپ کو پاکستان میں کاروبار شروع کرنے میں دلچسپی پر خوش آمدید کہا۔

جواب چھوڑیں