الجیریا میں فوجی طیارہ کو حادثہ‘ 257 افراد ہلاک

الجیریائی فوجی طیارہ آج حادثہ کا شکار ہوگیا۔ کم ازکم 257 افرادہلاک ہوگئے۔ مہلوکین میں بیشتر فوجی اور ان کے ارکان خاندان شامل ہیں۔ آئی ایل ۔76 طیارہ دارالحکومت الجیرس کے جنوب مغرب میں لگ بھگ 25 کیلو میٹر دور بوفارک فوجی اڈہ سے اڑان بھرنے کے فوری بعد نیچے گرپڑا۔ مہلوکین میں طیارہ کے 10 ارکان عملہ اور 247 مسافرین شامل ہیں۔ مسافرین میں بیشتر کا تعلق مسلح افواج سے تھا۔ رائٹر کے بموجب الجیریائی دارالحکومت کے باہر ایک فوجی طیارہ چہارشنبہ کے دن کھیت میں گرپڑا۔ 250 سے زائد افراد ہلاک ہوئے۔ عہدیداروں نے یہ بات بتائی۔ ٹی وی فوٹیج میں ہجوم کو طیارہ کے ملبہ کے قریب اکٹھا دکھایا گیا۔ یہ طیارہ روسی ساختہ ٹرانسپورٹ پلین تھا۔ سرکاری ٹی وی نے اطلاع دی کہ حادثہ میں 257 اموات ہوئی ہیں۔ الجیریا کی برسراقتدار ایف ایل این پارٹی کے ایک رکن نے خانگی النہر ٹی وی اسٹیشن کو بتایا کہ مرنے والوں میں 26 پولی ساریو کے ارکان ہیں۔ پولی ساریو وہ گروپ ہے جو الجیریا کی تائید سے پڑوسی مغربی صحارا کی آزادی کے لئے لڑرہا ہے ۔ اس علاقہ پر مراقش کا بھی دعویٰ ہے۔ طیارہ تیدوف جارہا تھا۔ یہ علاقہ الجیریا کی مغربی صحارا سے متصل سرحد پر واقع ہے۔ طیارہ ایرپورٹ کے احاطہ میں ہی حادثہ کا شکار ہوگیا۔ الجیریا کی وزارت ِ دفاع نے یہ بات بتائی۔ تیدوف میں مغربی صحارا کے ہزاروں پناہ گزیں مقیم ہیں۔ ان پناہ گزینوں میں کئی پولی ساریو کے حامی ہیں۔ اقوام متحدہ نے وسیع و عریض صحرائی علاقہ میں سمجھوتہ کرانے کی کوشش کی لیکن وہ ناکام رہی۔ 1975 میں اسپین نے یہاں اپنا اقتدار چھوڑدیا تھا ۔ مراقش کا اس علاقہ پر دعویٰ ہے جبکہ پولی ساریو نے خودساختہ صحراوی عرب جمہوریہ قائم کرلی ہے۔ الجیریا کی وزارت ِ دفاع نے مہلوکین کے ورثا سے اظہار ِ تعزیت کیا۔ فروری 2014 میں الجیریائی فضائیہ کا لاک ہیڈ C-130 ہرکلس طیارہ مشرقی الجیریا کے پہاڑی علاقہ میں تباہ ہوگیا۔ 77 مسافرین ہلاک ہوئے تھے اور صرف ایک مسافر زندہ بچا تھا۔ آئی اے این ایس کے بموجب الجیریائی دارالحکومت کے باہر ایک فضائی پٹی کے قریب فوجی طیارہ تباہ ہوگیا۔ کم ازکم 257 افراد ہلاک ہوگئے۔ الوشین 176 ٹروپ کیرئیر طیارہ الجیریائی فضائیہ کا تھا۔ وہ بوفارک فوجی اڈہ کے قریب گرپڑا۔ النہر خانگی ٹیلی ویژن چیانل نے اطلاع دی ہے کہ طیارہ میں 250 سے زائد فوجی سوار تھے اور وہ جنوب مغربی صوبہ جارہا تھا ۔ وہ ایک کھیت میں گرپڑا۔ ٹی وی فوٹیج میں رن وے کے قریب سے سیاہ دھواں اٹھتا دکھایا گیا۔ الجیریا کے فوجی سربراہ لیفٹیننٹ جنرل احمد صالح نے مہلوکین کے ورثا سے اظہار تعزیت کیا لیکن انہوں نے مرنے والوں کی تعداد نہیں بتائی۔ حادثہ کی وجہ معلوم نہیں۔ تحقیقات جاری ہیں۔ حکام نے بتایا کہ 300 فائر فائٹرس ‘ 40 ایمبولنس اور 40 فائر ٹرکس مقام حادثہ پر بھیجے گئے ہیں۔

جواب چھوڑیں