شام کے ہوائی اڈے پر تباہ کن میزائل حملہ

شام کے وسطی صوبہ حمص میں واقع ایک فضائی اڈہ کی پراسرار میزائل حملے میں تباہی کے بعد کی تصاویر منظرعام پر آئی ہیں۔ایران کی خبررساں ایجنسی تسنیم کے مطابق اتوار کو اس حملے میں سات ایرانی فوجی اہلکار ہلاک ہوگئے تھے۔ان کی نعشیں تجہیز وتکفین کے لیے منگل کو ایران پہنچا دی گئی تھیں۔ایرانی میڈیا نے قبل ازیں چار ایرانی فوجیوں کی ہلاکت کی اطلاع دی تھی۔شامی حکومت اور اس کے اتحادی ایران نے اسرائیل پر حمص شہر کے نزدیک واقع تیفور ائیربیس پر میزائل حملے کا الزام عاید کیا ہے لیکن اسرائیل نے اس حملے کی تردید یا تصدیق نہیں کی ہے۔اس حملے سے چند گھنٹے قبل ہی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شام کے شہر دوما پر زہریلی گیس کے حملے کی اطلاعات منظرعام پر آنے کے بعد خبردار کیا تھا کہ اس کے ذمے داروں کو بھاری قیمت چکانا پڑے گی۔شامی حکومت نے اب تک اس حملے سے کسی قسم کے تعلق کی تردید کی ہے۔ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے صدر ٹرمپ کے اس دھمکی آمیز بیان کے بعد کہا تھا کہ ’’ بظاہر یہ لگتا ہے، امریکی حکومت فوجی مداخلت کے جواز ڈھونڈ رہی ہے۔ایران کا کیمیائی ہتھیاروں کے بارے میں موقف بڑا واضح ہے اور ہم ان کی کسی بھی ہدف کے خلاف استعمال کی مذمت کرتے ہیں ‘‘۔ واضح رہے کہ پاسداران انقلاب ایران کے فوجی شامی صدر بشارالاسد کی حمایت میں گذشتہ سات سال سے لڑرہے ہیں اور شام کی خانہ جنگی میں ایک ہزار سے زیادہ ایرانی ہلاک ہوچکے ہیں۔ان میں پاسداران انقلاب کے متعدد سینیر افسر بھی شامل ہیں۔

جواب چھوڑیں