محبوبہ مفتی کی راج ناتھ سنگھ سے ملاقات۔ جموں و کشمیر کی صورتحال پر تبادلہ خیال

 جموں وکشمیر میں تشدد میں حالیہ اضافہ کے درمیان چیف منسٹر محبوبہ مفتی نے آج وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ سے ملاقات کی اور ان سے ریاست کی سیکوریٹی صورتحال پر بات چیت کی۔ حالات پھر سے معمول پر کیسے لائے جائیں اس پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔ 20 منٹ کی ملاقات میں دونوں قائدین نے مرکز کے نمائندہ دنیشور شرما کی پہل پر بھی بات چیت کی۔ چیف منسٹر نے وزیر داخلہ کو نظم وضبط کی صورتحال کی جانکاری دی اور بتایا کہ وادی میں امن بحال کرنے کیا اقدامات کئے جارہے ہیں۔ پاکستان سے متصل سرحد کی صورتحال پر بھی بات چیت ہوئی۔ یہ ملاقات ایسے وقت ہوئی ہے جب کٹھوا اجتماعی عصمت ریزی‘ عسکریت پسندوں کے تشدد اور سیکوریٹی فورسس کے ساتھ انکاؤنٹرس کی سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ زور پکڑتا جارہا ہے۔ محبوبہ مفتی اور راج ناتھ سنگھ نے شہری آبادی کا دکھ دور کرنے کے طریقوں پر بھی بات کی۔ وزارتِ داخلہ کے ایک عہدیدار نے یہ بات بتائی۔ وادی کشمیر میں عسکریت پسند تشدد بڑھ گیا ہے۔ جموں وکشمیر میں جاریہ سال 31 مارچ تک دہشت گرد تشدد کے 60 واقعات پیش آچکے ہیں۔ 15 سیکوریٹی ملازمین اور 17 دہشت گرد ہلاک ہوئے۔ گذشتہ ہفتہ جموں وکشمیر پولیس کا ایک عہدیدار سری نگر میں سنگباری کے واقعہ میں شدید زخمی ہوا تھا۔ کل سابق مرکزی وزیر یشونت سنہا اور سابق صدرنشین اقلیتی کمیشن وجاہت حبیب اللہ نے کہا تھا کہ وادی کشمیر میں تشدد رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ انہوں نے صورتحال پر تشویش ظاہر کی تھی۔

جواب چھوڑیں