ٹی آر ایس حکومت کو سچائی سامنے آنے کا خوف: پروفیسر کودنڈارام

صدر تلنگانہ جنا سمیتی (جے ٹی ایس ) پروفیسر کودنڈا رام نے دعویٰ کیا کہ ٹی آر ایس حکومت کو شدید خوف لاحق ہے کہ نئی ریاست کی سچائی منظر عام پرآجائے گی۔ اس لئے حکومت، ٹی جے ایس کے جلسہ عام کے انعقاد کی اجازت نہیں دے رہی تھی ۔ حکمراں جماعت کو یہ خوف لاحق ہوگیا ہے کہ حقائق اور سچائی منظر عام پر آجائے گی جس سے حکومت کی چولیں ڈھیلی ہو سکتی ہیں اس لئے حکومت ، ٹی جے ایس کو جلسہ عام کے انعقاد کی اجازت نہیں دے رہی ہے ۔ پروفیسر کودنڈا رام نے الزام عائد کیا کہ ریاست سے آمرانہ حکومت کے خاتمہ کا وقت آگیا ہے ۔ انہوںنے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کے اس بیان کو مضحکہ خیز قرار دیا جس میں کے سی آر نے اس یقین کا اظہار کیا تھا کہ آئندہ انتخابات میں ٹی آر ایس کو ایک سونشستیں ملیں گی۔ چہارشنبہ کے روز میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے پروفیسر کودنڈا رام نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ تمام کے ساتھ یکساں برتاؤ کرے اور قانون کے مطابق حکومت کرنی چاہئے ۔ حکومت، شہریوں کی آزادی پر تحدیدات عائد کرنا چاہتی ہے جو ملک کیلئے انتہائی خطرناک ہے حیدرآباد میں ہی جلسہ عام منعقد کرنے کے اسباب وعلل جاننے سے متعلق حکومت کے اقدام کو انتہائی غلط قرار دیتے ہوئے پروفیسر کودنڈا رام نے کہا کہ دراصل ریاستی حکومت اور چیف منسٹر کے سی آر، ٹی جے ایس سے خوفزدہ ہیں۔ انہوں نے ریاست کے عوام پر زور دیا کہ وہ کے سی آر حکومت کی غیر جمہوری پالیسیوں کے خلاف اٹھ کھڑے ہوجائیں۔ انہوںنے الزام عائد کیا کہ ٹی جے ایس کے خلاف حکومت کا رویہ انتقامی ہے اور ٹی آر ایس کے مفاد کی خاطر ایسا کیا جارہا ہے۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ عدالت سے انہیں ضرور انصاف ملے گا ۔ پروفیسر کودنڈا رام نے الزام عائد کیا کہ عوام کے اکھٹا ہونے سے آلودگی پھیلنے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے حکومت ،ٹی جے ایس کے جلسہ کی اجازت نہیں دے رہی ہے جبکہ حکومت کو اس بات پر بھی سوچنا چاہئے کہ سینما سے بھی آلودگی پھیلتی ہے آیا وہ سینما گھروں پر بھی پابندی لگا دیں گے ۔

جواب چھوڑیں