کیسس الاٹ کرنا چیف جسٹس کا اختیار تمیزی:سپریم کورٹ

 سپریم کورٹ نے چہارشنبہ کے دن کہہ دیا کہ بنچس کی تشکیل اور کیسس کا الاٹمنٹ چیف جسٹس آف انڈیا(سی جے آئی) کا ’’اختیارِ تمیزی‘‘ ہے۔ سی جے آئی اعلیٰ دستوری عہدیدار ہیں۔ چیف جسٹس دیپک مشرا‘ جسٹس اے ایم کھنولکر اور جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ پر مشتمل بنچ نے اپنے فیصلہ میں کہا کہ کیسس الاٹ کرنا اور بنچس تشکیل دینا چیف جسٹس کا اختیار تمیزی ہے۔ یہ عدلیہ کے کام کاج کو آسانی سے چلانے کے لئے ضروری ہے۔ سپریم کورٹ نے مفادِ عامہ کی ایک درخواست (پی آئی ایل) مسترد کردی جس میں بنچوں کی تشکیل کو باقاعدہ بنانے قواعد وضوابط وضع کرنے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔ ایڈوکیٹ اشوک پانڈے کی پی آئی ایل مسترد کرتے ہوئے سہ رکنی بنچ نے کہا کہ چیف جسٹس آف انڈیا ادارہ کے سربراہ ہیں اور عدالت کا کام آسانی سے چلانے کا انتظامی اختیار انہیں حاصل ہے۔ بنچ کی طرف سے فیصلہ سناتے ہوئے جسٹس چندرچوڑ نے کہا کہ ادارہ کا سربراہ ہونے کے ناطہ چیف جسٹس پر عدم اعتماد والی کوئی بات نہیں۔

جواب چھوڑیں