ہندوستان ‘علاقائی سالمیت اور برقراری امن کا پابند عہد: وزیراعظم مودی

وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ ہندوستان امن وامان کے لئے اتنا ہی پابند عہد ہے جتنا اپنے ملک کی علاقائی سالمیت کے تحفظ کے لئے۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ ان کی حکومت مسلح افواج کی طاقت میں اضافہ کے لئے اسے (اسلحہ سے ) لیس کرنے تمام ضروری اقدامات کرنے تیار ہے۔ وزیراعظم نے یہاں ڈیفنس ایکسپو کا رسمی افتتاح کرنے کے بعد یہ تبصرہ ہندوستان سے متصل تقریباً 4 ہزار کیلو میٹر طویل سرحد پر چین کی سرگرمیوں میں اضافہ کے پس منظر میں کیا ہے۔ علاوہ ازیں بیجنگ ‘ ہند ۔ بحرالکاہل خطہ میں اپنے اثرو رسوخ میں اضافہ کرنے کی کوششیں بھی کررہا ہے۔ ہندوستان میں دفاعی پیداوار کو فروغ دینے ان کی حکومت کے اقدامات کا تذکرہ کرتے ہوئے مودی نے سابق یوپی اے حکومت پر دفاعی شعبہ میں پالیسیوں کو معطل رکھنے کا بھی الزام عائد کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس کی وجہ سے ملک کی فوجی تیاریاں متاثر ہوئی تھیں۔ مودی نے سرکردہ بیرونی اکزیکٹیوز اور اندرون ملک دفاعی کمپنیوں کے اعلیٰ عہدیداروں کی موجودگی میں کہا کہ ایک دور ایسا بھی تھا جب پالیسی تعطل کے سبب دفاعی تیاریوں کے اہم معاملہ میں رکاوٹ پیدا ہوئی تھی۔ ہم نے دیکھا ہے کہ کاہلی ‘ نااہلی یا پھر بعض درپردہ مقاصد سے ملک کو کتنانقصان پہنچ سکتا ہے لیکن اب ایسا نہیں ہے اور نہ کبھی ہوگا۔ اگرچہ کہ یہ 4 روزہ دفاعی نمائش جو فوجی پلیٹ فارمس اور اسلحہ کی نمائش کے لئے سالانہ دو مرتبہ منعقد کی جاتی ہے‘ کل شروع ہوئی تھی تاہم وزیراعظم نے آج اس کا رسمی افتتاح کیا۔ اس تقریب میں وزیر دفاع نرملا سیتارمن ‘ گورنر ٹاملناڈو بنواری لال پروہت ‘ ریاستی چیف منسٹر ای کے پلانی سوامی ‘ ڈپٹی چیف منسٹر او پنیر سیلوم اور متعدد ممالک کے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہم امن و امان کی برقراری کے اتنے ہی پابند عہد ہیں جتنا اپنے ملک اور قوم کے تحفظ کے لئے ہیں۔ اسی لئے ہم اپنی مسلح افواج کو ہتھیاروں سے لیس کرنے تمام درکار اقدامات کے لئے تیار ہیں۔ وزیراعظم نے جو ایک ایسے وقت ٹاملناڈو کا دورہ کررہے ہیں جبکہ ریاست بھر میں دریائے کاویری کے پانی کے مسئلہ پر احتجاج جاری ہے‘ مسلح افواج کو عصری بنانے اور 126 میڈیم ملٹی رول لڑاکا طیارے (ایم ایم آر سی اے ) کے حصول کے لئے سابق یو پی اے حکومت کی دیرینہ تاہم ناکام پہل پر بھی تبادلہ خیال کیا۔

جواب چھوڑیں