اناؤ کیس کے خاطی کو بخشا نہیں جائے گا : چیف منسٹر یوپی

چیف منسٹر اترپردیش یوگی آدتیہ ناتھ نے آج اپنی حکومت کی اناؤ عصمت ریزی کیس واقعہ میں مدافعت کی اور کہا کہ یہ کام ریاستی پولیس کا ہے ، جس سے ملزم ایم ایل اے کلدیپ سنگھ سنجر کی گرفتاری عمل میں آئے ۔ تحقیقات سی بی آئی کے سپرد کردی گئی اور مجھے یقین ہے کہ سی بی آئی ایم ایل اے کو بھی گرفتار کرلے گی ۔ ہماری حکومت اس معاملہ میں کوئی مفاہمت نہیں کرے گی ۔ اس بات سے کوئی مطلب نہیں کہ ملزم کتنا اثر والا ہے ، اسے بخشا نہیں جائے گا۔ چیف منسٹر نے سی بی آئی کارروائی پر اپنے ردّ ِ عمل میں یہ بات کہی ۔ چیف منسٹر نے کہا پہلے ہی کئی پولیس ملازمین اور ڈاکٹروں نے اس کام کو اپنے ہاتھ میں لیا ہے اور ان تمام لوگوں نے کیس کو معطلی میں رکھا ہے۔ خصوصی تحقیقات ٹیم (ایس آئی ٹی) نے بھی اچھا کام کیا ہے اور اس کی سفارشات پر ہی ایف آئی آر ایم ایل اور دیگر افراد کے خلاف درج کیے گئے ۔ آدتیہ ناتھ کا ردّ ِ عمل اس وقت سامنے آیا جب سی بی آئی نے سینگر کو اس کی لکھنؤ رہائش گاہ سے آج صبح گرفتار کرلیا اور آج ہی عدالت میں پیش کردیا جائے گا۔ اس دوران پانچ رکنی سی بی آئی ٹیم ، اناؤ میں ہے ، تاکہ متاثرہ ارکانِ خاندان سے بات چیت کی جاسکے ، جنہیں شہر کی ایک ہوٹل میں ٹھہرایا گیا ہے ۔ سی بی آئی ٹیم مکھی گاؤں کا دورہ کرنے والی ہے ، جہاں اس نے پولیس ملازمین اور دیگر عہدیداروں بشمول جنہیں حکومت نے معطل کردیا ہے ، پوچھ تاچھ کرے گی۔

جواب چھوڑیں