شام کی صورتحال فوری توجہ کی متقاضی:سکریٹری جنرل انٹینو گٹریس

شام کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے سکریٹری جنرل انٹینو گٹریس نے کہا ہے کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ فوراً ملک میں قیام امن کیلئے کوششیں کی جائیں۔ انہوںنے اقوام متحدہ کے پانچ مستقل ارکان سے اپیل کی ہے کہ وہ موجودہ تعطل کو ختم کرنے کیلئے اقدامات کریں کیونکہ جنگ سے تباہ حال ملک میں عوام کو کئی مسائل اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال کئے جانے کی اطلاعات انتہائی تشویشناک ہے۔ انہوںنے مزید بتایاہے کہ وہ سلامتی کونسل کے موقف پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں۔ کونسل کے موقف پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے انہوںنے مزید بتایاہے کہ ارکان کو چاہئے تھاکہ وہ کوئی معاہدہ پر اتفاق رائے کرلیتے تاکہ شام کی صورتحال کو مزید بگڑنے سے بچایاجاسکے۔ سکریٹری جنرل نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ ملک کے عوام کو ناقابل بیان مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ سکریٹری جنرل نے مزید کہاہے کہ انہوںنے کونسل کے پانچ مستقل ارکان چین‘ فرانس‘ روس‘ برطانیہ اور امریکہ کے سفراء سے ملاقات کی ہے۔ چہارشنبہ کو ہوئی ملاقات کے دوران انہوںنے شانتی صورتحال پر گہری تشویش کااظہار کیا اورکہاکہ اب وقت آگیا ہے کہ ہم وہاں کے افراد کو تکالیف اور حملوں سے محفوظ رکھنے کیلئے فوراً موثر اقدامات شروع کردیں۔ منگل کو 15رکنی ایوان نے تین علحدہ مسودہ قراردادوں پر ووٹ دیا تاکہ شام کے شہر دوما میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کئے جانے کے الزامات کے تعلق سے اپنے موقف کا اظہار کیا جاسکے جس کے بعد اس بات کا اظہار کیا گیا ہے کہ شام میں باغیوں کیخلاف کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال کیا گیا ہے۔ سکریٹری کونسل نے مزید بتایا ہے کہ ایک ٹیم کو شام روانہ کیا جائے گا تاکہ حقائق معلوم کئے جاسکے۔ اقوام متحدہ کی عالمی صحت تنظیم نے کہاہے کہ اس بات کی اطلاع ملی ہے کہ تقریباً500مریض جوکہ شام کے دواخانوں میں زیر علاج ہے وہ کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال اور مہلک گیاس سے متاثر ہوئے ہیں ، کیونکہ شام کے مضافات کے علاقوں میں بھی بتایاجاتا ہے کہ انتہائی نقصاندہ گیاس کا استعمال کیا گیا ہے۔

جواب چھوڑیں