کلدیپ سنگھ سینگر کوگرفتار کرلینے الٰہ آباد ہائی کورٹ کی ہدایت

 الٰہ آباد ہائی کورٹ نے آج سی بی آئی کو ہدایت دی کہ اُناؤ کیس کے ملزم بی جے پی رکن اسمبلی کلدیپ سنگھ سینگر کو گرفتار کرلیا جائے۔ چیف جسٹس ڈی بی بھوسلے اور جسٹس سنیت کمار پر مشتمل بنچ نے ایجنسی کو یہ ہدایت اس وقت دی جب حکومت اترپردیش کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ سینگر کو پوچھ تاچھ کے لئے تحویل میں لیا گیا ہے‘ ابھی گرفتار نہیں کیا گیا۔ عدالت نے سی بی آئی سے کہا کہ وہ اپنی تحقیقات ازروئے قانون جاری رکھے۔ وہ چاہے تو کیس کے جن ملزمین کو ضمانت ملی ہوئی ہے اس کی منسوخی کی درخواست دے سکتی ہے۔ عدالت نے سی بی آئی سے یہ بھی کہا کہ وہ 2مئی تک اسٹیٹس رپورٹ داخل کردے۔ بنچ نے یہ حکم سینئر وکیل گوپال سروپ چترویدی کے تحریر کردہ مکتوب پر جاری کیا جنہوں نے عدالت کی زیرنگرانی تحقیقات کی گذارش کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان کے مکتوب کو مفادِ عامہ کی درخواست سمجھا جائے۔ عدالت نے کل ایڈوکیٹ جنرل سے پوچھا تھا کہ آیا ریاستی حکومت سینگر کو گرفتار کرنے والی ہے۔ ایڈوکیٹ جنرل راگھویندر سنگھ نے جواب دیا تھا کہ وہ اس سلسلہ میں کچھ بھی کہنے کے موقف میں نہیں ہیں۔

جواب چھوڑیں