منیکا کے خراج کے بعد دلتوں نے بابا صاحب کے مجسمہ کی صفائی کی

مرکزی وزیر منیکا گاندھی اور بعض بی جے پی قائدین کی جانب سے بی آر امبیڈکر کے 127ویں یومِ پیدائش کے موقع پر یہاں ان کے مجسمہ پر پھول مالا چڑھائے جانے کے بعد دلت برداری کے ارکان نے صفائی کی اور دعویٰ کیا کہ ان (بی جے پی قائدین) کی موجودگی کے سبب ماحول آلودہ ہوگیا تھا۔ بروڈہ کی مہاراجہ سایا جی راؤ یونیورسٹی کی ایس سی ؍ ایس ٹی ایمپلائز یونین کے جنرل سکریٹری ٹھاکر سولنکی نے دعویٰ کیا کہ وہ لوگ بی جے پی قائدین سے پہلے خراجِ عقیدت پیش کرنے اس مقام پر پہنچے تھے۔ دلت برداری کے ارکان نے جی ای بی سرکل ایریا میں دیگر پارٹی قائدین اور مرکزی وزیر برائے ترقی خواتین و اطفال کی موجودگی کے خلاف نعرہ بازی کی ۔ وہ منیکا گاندھی ، بی جے پی رکن پارلیمنٹ رنجن بین بھٹ ، شہر کے میئر بھارت ڈنگر ، بی جے پی رکن اسمبلی یوگیش پٹیل اور دیگر کے ہمراہ امبیڈکر کے مجسمہ پر پہنچی تھیں۔ سولنکی کی زیرقیادت دلت برداری کے ارکان نے ان کے خلاف نعرہ بازی شروع کردی ۔ پولیس اور ان کے درمیان بحث و تکرار شروع ہوگئی ، لیکن کوئی ناخوش گوار واقعہ پیش نہیں آیا ۔ مینکا گاندھی اور دیگر قائدین کی جانب سے صبح تقریباً 9 بجے مجسمہ پر پھول مالا چڑھائی گئی اور وہ وہاں سے روانہ ہوگئے ، جس کے بعد دلت برادری کے ارکان نے مجسمہ کو دودھ اور پانی سے دھویا ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی قائدین کی موجودگی کے سبب ماحول آلودہ ہوگیا تھا۔ سولنکی نے کہا کہ ہم نے پولیس کو بتایا کہ چونکہ ہم بی جے پی قائدین سے کافی پہلے وہاں پہنچے تھے ، اسی لیے پہلے خراجِ عقیدت پیش کرنے کا ہمیں حق حاصل ہے۔ بہرحال پولیس نے ہمیں مجسمہ پر پھول مالا چڑھانے سے روک دیا اور کہا کہ پروٹوکول کے مطابق میئر کو پہلا حق حاصل ہے ۔ اس پر ہماری برادری کے ارکان برہم ہوگئے ۔ منیکا گاندھی اور دیگر بی جے پی قائدین کی موجودگی سے جی ای بی سرکل ایریا میں ماحول آلودہ ہوگیا ، اسی لیے ہم نے مجسمہ کی دودھ اور پانی سے صفائی کی ۔

جواب چھوڑیں