عثمانیہ یونیورسٹی میں415 تدریسی جائیدادوں پر تقررات

ایک طویل انتظار کے بعد عثمانیہ یونیورسٹی کے مختلف شعبہ جات میں415 تدریسی جائیدادوں پر تقررات کی تیاریاں زور وشور سے جاری ہیں۔ ان جائیدادوں پر تقررات کی منظوری اور دیگر امور کی تکمیل کیلئے یونیورسٹی نے28 اپریل کو ایگزیکٹیو کونسل ( ای سی ) کا اجلاس طلب کیا ہے ۔ یونیورسٹی نے28 اپریل کو ایگزیکٹیو کونسل کا اجلاس طلب کیا ہے ۔ ای سی کے اجلاس کے ایجنڈہ میں تدریسی جائیدادوں پر تقررات کو فوقیت حاصل رہے گی ۔ وائس چانسلر عثمانیہ یونیورسٹی پروفیسر ایس رامچندرم نے میڈیا کو یہ بات بتائی ۔ ان 415 تدریسی جائیدادوں میں294 اسٹنٹ پروفیسر اور 121 اسوسی ایٹ پروفیسرس کیڈر کی جائیدادیں شامل ہیں تاہم پروفیسر کیڈر کی ایک بھی جائیداد شامل نہیں ہے ۔ ای سی اجلاس کے بعد یونیورسٹی، اعلامیہ جاری کرنے کا منصوبہ رکھتی ہے ۔تقررات کا یہ عمل اگست یا ستمبر تک پورا ہوجائے گا ۔ انہوںنے کہاکہ ان جائیدادوں پر تقررات میں یونیورسٹی ، روسٹر سسٹم کو سختی کے ساتھ لاگو کرے گی ۔ قبل ازیں یو جی سی نے گشتی اعلامیہ روانہ کرتے ہوئے تمام یونیورسٹیوں کے رجسٹرار سے کہا کہ وہ ریزرویشن پالیسی پر سختی کے ساتھ عمل درآمد کریں۔ اس پس منظر میں تلنگانہ اسٹیٹ کونسل فار ہائر ایجوکیشن نے ریاست کی تمام یونیورسٹیوں میں نئی ریزرویشن پالیسی کے بارے میں وضاحت طلب کرلی ہے۔ کونسل کے عہدیدار نے بتایا کہ مرکزی حکومت سے ہمیں وضاحت مل چکی ہے پیر کے روز اس سلسلہ میں ایک اجلاس منعقد ہوگا جس میں ریزرویشن پالیسی پر صحیح وحتمی صورتحال سامنے آجائے گی ۔

جواب چھوڑیں