وارانسی فلائی اوور انہدام ۔برج کارپوریشن عہدیداروں کے خلاف ایف آئی آر درج

وارنسی کے حکام نے شہر میں کل فلائی اوور کے انہدام میں لوگوں کی اموات پر یوپی برج کارپوریشن کے عہدیداروں کے خلاف ایف آئی درج کرائی ہے۔ بہرحال ایک اور شرمناک واقعہ میں پوسٹ مارٹم ہاؤز کے ایک جاروب کش کو اس وقت معطل کردیا گیا جب اس نے نعشیں حوالے کرنے مہلوکین کے ارکانِ خاندان سے 200 روپئے فی کس کی ادائیگی کا مطالبہ کیا۔ حکام کو پتہ چلا تھا کہ جاروب کش بنارسی جو بی ایچ یو ہاسپٹل کا جاروب کش ہے ، ہر نعش کی حوالگی کے لیے 200 روپئے فی کس ادائیگی کا مطالبہ کررہا ہے۔ آج صبح یہ اطلاع ملتے ہی اسے فوری معطل کردیا گیا۔ بعد ازاں اس کے خلاف لنکا پولیس پولیس اسٹیشن میں ایک ایف آئی آر درج کرائی گئی۔ اسی دوران اس المیہ میں لوگوں کی اموات کے سلسلہ میں برج کارپوریشن کے انجینئروں کے خلاف بھی ایک ایف آئی آر درج کرلی گئی ہے۔ یہ ایف آئی آر تعزیراتِ ہند کی دفعہ 304، 308 اور 427 کے تحت کنٹونمنٹ پولیس اسٹیشن علاقہ میں درج کی گئی ہے ۔ حکومت ِ اترپردیش نے برج کارپوریشن کے 4 سینئر انجینئروں کو معطل بھی کردیا ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر کیشو پرساد موریہ نے جو جائے واقعہ پر موجود ہیں ، یو این آئی کو بتایا کہ تکنیکی کوتاہیوں کا پتہ چلانے ایک سہ رکنی اعلیٰ سطحی تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی گئی ہے ۔ یہ تحقیقاتی ٹیم چیف منسٹر کی جانب سے اگریکلچر پروڈکشن کمشنر اے پی سی کی زیرصدارت تشکیل دی گئی تحقیقاتی ٹیم سے علیحدہ ہے۔ ایک اور اطلاع کے مطابق وزیر اعظم نریندر مودی کے پارلیمانی حلقہ بنارس کے سگرا علاقہ میں کینٹ ریلوے اسٹیشن کے نزدیک زیر تعمیر فلائی اوور حادثہ میں بچاؤ اور راحت کا کام مکمل ہو چکا ہے این ڈی آر ایف کے ڈی آئی جی آلوک کمار سنگھ نے آج بتایا کہ بچاؤ کا کام پورا ہو چکا ہے۔ بیم کو کرین کی مدد سے ہٹایا جا چکا ہے۔ ملبے میں دبی گاڑیوں کو دوپہر تک ہٹایا جائے گا۔ بھیڑ بھاڑ والے اس علاقے میں زیر تعمیر پل کے دونوں طرف دیوار کھڑی کی جائے گی۔ تعمیراتی کام فی الحال معطل رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس حادثے میں 16 افراد کی موت ہوئی ہے جبکہ آٹھ افراد سنگین طور پر زخمی ہیں۔ ریلیف ٹیم نے ملبے سے تین افراد کو محفوظ طور پر باہر نکالا ہے۔سرکاری طور پرمرنے والوں کی تعداد پر کشمکش بنا ہوا ہے۔ چیف سکریٹری (اطلاع ) اونیش اوستھی نے کل رات 18 لوگوں کے مرنے کی تصدیق کی تھی جبکہ این ڈی آر ایف کے ڈی آئی جی نے حادثے میں مرنے والوں کی تعداد 16 بتائی ہے۔پولیس ذرائع کے مطابق حادثے میں زخمی دو لوگوں کی دیر رات علاج کے دوران موت ہوگئی۔ جس سے حادثے میں مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 20 ہو گئی ہے۔ حادثے میں زخمی لوگوں کو بی ایچ یو ٹراما سینٹر سمیت دیگر اسپتالوں میں داخل کرایا گیا ہے۔ زخمیوں میں سے پانچ کی حالت کافی نازک بتائی جاتی ہے۔ حکومت اتر پردیش نے مرنے والے کے گھر والوں کو 5۔5 لاکھ روپے اور زخمیوں کو 2۔2 لاکھ روپے کی امداد دینے کا اعلان کیا ہے۔ وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے آدھی رات کے وقت جائے حادثہ کا دورہ کیا اورعہدیداروں سے حادثے کی وجوہات دریافت کی۔ انہوں نے اسپتالوں میں داخل زخمیوں کی خیر وخبر لی اور متاثرین کے گھر والوں کو حکومت کی جانب سے ہر ممکن مدد کا یقین دلا یا۔

جواب چھوڑیں