امیت شاہ نے راہول کو کانگریس کی تاریخ کی یاد دہانی کروائی

صدر کانگریس راہول گاندھی کی جانب سے بی ایس یدیورپا کی حلف برداری سے تیقن کے لئے بی جے پی پر حملہ کرنے کے خطوط پر بی جے پی کے صدر امیت شاہ نے راہول گاندھی کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اس عظیم قدیم پارٹی کو ہولناک ایمرجنسی کی اپنی شاندار تاریخ اور دفعہ 356کے بیجا استعمال کو یاد رکھنا چاہئیے۔ صدر کانگریس کو بظاہر اپنی پارٹی کی عظمت رفتہ تاریخ یاد نہیں ہے ۔ دفعہ 356مرکز کوریاستوں کو صدر راج نافذ کرنے کا حق دیتا ہے اور بی جے پی قائدین کے بموجب ان ضوابط کا کئی دہوں سے کانگریس نے بڑی حد تک بیجا استعمال کیا ہے ۔ شاہ نے کرناٹک کی تبدیلیوں پر کانگریس کے موقف کی بھی مذمت کی انہوںنے کہا جس وقت مایوس کانگریس نے موقع پرست پیشکش جے دی ایس کو دی یہ کرناٹک کی بہبودی کے لئے نہیں بلکہ سیاسی فوائد کے لئے تھی یہ بات شرمناک اور جمہوریت کے قتل کے مترادف ہے اقتدار حاصل کرنے ایک ساتھ کانگریس اور جے ڈی ایس کے آنے کے جواز پر سوال کرتے ہوئے شاہ نے کہا کرناٹک میں جس پارٹی کو عوام کی اکثریتی تائید حاصل ہوئی ہے وہ بی جے پی ہے جس نے 104نسشتیں جیتی ہیں ۔ بی جے پی 78نشستوں تک محدود رہی خود اس کے چیف منسٹر اور وزراء نے ووٹوں کے بڑے فرق سے انتخابات کھوئے ہیں ۔ قبل ازیں دن میں گاندھی نے ٹویٹڑ پر تحریر کیا تھا کہ بی جے پی کا غیر معقول اصرار کہ وہ کرناٹک میں حکومت بنائے گی جبکہ واضح طورپر وہ درکار تعداد نہیں رکھتی یہ بات ہماری جمہوریت کا مذاق اڑانے کے مماثل ہے بی جے پی صدر نے نشاندہی کی کہ ایچ ڈی دیوے گوڑا کی زیر قیادت جے ڈی ایس صرف 37نسشتوں پر کامیاب ہوسکی اور کئی دیگر نشستوں پر اپنی ڈپازٹس گنوائیں ۔ انہوں نے ریمارک کیا۔ عوام بات پہچاننے کے لئے سمجھدار ہیں۔ اسی دوران کئی بی جے پی قائدین بشمول مرکزی وزراء نے سینئر پارٹی قائد بی ایس یدیورپا کی بطورچیف منسٹر حلف برداری کا خیر مقدم کیا ہے ۔ اور یہ اعتماد ظاہر کیا کہ نئی حکومت اچھی حکمرانی فراہم کرے گی ۔ کرناٹک ڈکٹیٹر شپ سے عوامی حکومت کے طورپر گہری تبدیلی کے مرحلہ میں ہے ۔ بی جے پی ایک بہترین حکمرانی پیش کرے گی اور منشور میں کیے گئے ہر وعدے کو پورا کرے گی ۔ یہ بات بی جے پی قائد اور نومنتخبہ لیجسلیٹر بی سری راملو نے ایک ٹویٹ میں بتائی ۔ ایک تو دریافت بی جے پی کے قبائلی چہرے سری راملو کے بارے میں بتایا جارہا ہے کہ انہیں ڈپٹی چیف منسٹر کا عہدہ دینے پر غور کیا جارہا ہے ۔ سینیئر پارٹی قائد ڈاکٹر سبرامنین سوامی نے ایک ٹیلی ویژن چینل کو بتایا کہ پارٹی بڑی آسانی سے اکثریت ثابت کرنے کی اہل ہوگی۔

جواب چھوڑیں