شتروگھن سنہا نے کرناٹک میں حکومت قائم کرنے کے بی جے پی کے فیصلہ پر استفسار کیا

 بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ شتروگھن سنہا نے درکار اکثریت کے بغیر کرناٹک میں حکومت قائم کرنے کے پارٹی کے فیصلہ پر سوال کیا ہے ۔ انہوںنے کہا کہ ’’جن شکتی‘‘ پر ’’دھن شکتی‘ کی سیاست نہ تو قابل قبول ہے اور نہ ہی پسندیدہ ۔ کئی ٹویٹس میں پٹنہ صاحب کے رکن پارلیمنٹ جو کچھ عرصہ کے لئے کئی مسائل پر اپنی پارٹی کے نقاد رہے ہیں ۔ انہوںنے کانگریس اور جے ڈی (ایس) کے مابعد انتخابات اتحاد کی تائید بھی کی ہے جو جنوبی ریاست میں انہیں ایک موقع عطا کرتا ہے کیونکہ دونوں مل کر اکثریتی تعداد رکھتے ہیں ۔ انہوںنے کہا سر ہم آگ کے ساتھ کیوں کھیل رہے ہیں جمہوریت اس سسٹم سے مذاق بن گئی ہے ایک مقولہ ہے آپ کسی بھی طرح جیتنے کے لئے تمام وقت تمام لوگوں کو بے وقوف نہیں بناسکتے اور مزید برآں مماثل کا مشورہ بھی نہیں دیا جاسکتا ۔ انہوںنے اچھی سمجھ اورشعور کی دعا کرتے ہوئے کہا کہ اب یہ معاملہ عدالت تک پہنچ چکا ہے اور عدالت نصف شبی ڈرامہ میں مہربانی سے جو راضی ہوئی ہے وہ ایک بڑی خبر ہے ۔ ہم عدلیہ کا اعلیٰ احترام کرتے ہیں ہمیں انتظار کرنا اور دیکھنا ہوگا ۔ موجودہ حالات میں کوئی حقیقی طورپر چاہتا ہے کہ انصاف برقرار رہے ۔

جواب چھوڑیں