رمضان فیسٹول کے اہتمام کیلئے 33کروڑمنظور

ڈپٹی چیف منسٹر محمدمحمودعلی نے کہاکہ ریاست میں رمضان فیسٹول کے اہتمام کے لئے حکومت کی جانب سے 33کروڑروپے منظورکیئے گئے ہے ۔ لال بہادر اسٹیڈیم میں 8جون کو منعقد شدنی مرکزی دعوت افطار کے انتظامات کا معائنہ کرنے کے بعد صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے محمدمحمودعلی نے کہاکہ حکومت کی جانب سے صرف دعوت افطار کے لئے 15 کروڑروپے منظورکئے گئے ہیں۔ اس رقم سے ریاست بھر میں 800مساجد میں دعوت افطار وطعام کانظم کیاجائے گا۔ اس ضمن میں ہر مسجد کوایک لاکھ روپے جاری کئے جائیں گے ۔ انہوںنے کہاکہ صرف حیدرآباد میں ہی 400 سے زیادہ مساجد میں دعوت افطار کانظم کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ 800 مساجد کے ذریعہ (ہرمسجد سے 500 افراد میں) رمضان گفٹ پیاکٹس کی تقسیم عمل میںلائی جائے گی۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کہاکہ نئی ریاست کی تشکیل کے بعد تلنگانہ ‘ملک کی واحد ریاست بن کرابھری ہے جہاں سرکاری سطح پر رمضان فیسٹول منایا جاتاہے ۔ انہوںنے عہدیداروں سے 8جون کو منعقد شدنی دعوت افطار کے لئے نقائص سے پاک انتظامات کرنے ‘مسلسل برقی سربراہی کو یقینی بنانے ‘صاف پینے کے پانی کی سربراہی کانظم کرنے ‘ پارکنگ انتظامات کرنے اورپبلک اڈریس سسٹم کی تنصیب عمل میںلانے کی ہدایت دی اورتمام امورکی نگرانی وانجام دہی کے لئے ضلع کلکٹر حیدرآباد ڈاکٹر یوگیتا رانا کوبطور نوڈل آفیسر مقرر کیاگیاہے ۔ اس موقع پر مشیر حکومت تلنگانہ برائے اقلیتی امور اے کے خان ‘سکریٹری محکمہ اقلیتی بہبود دانا کشور ‘ڈائرکٹر اقلیتی بہبود شاہنواز قاسم ‘ ڈائرکٹر وسکریٹری اردواکیڈیمی پروفیسر ایس اے شکور‘ صدر نشین تلنگانہ اسٹیٹ وقف بورڈ ورکن کونسل محمد سلیم ‘نائب صدرنشین تلنگانہ اسٹیٹ اقلیتی مالیاتی کارپوریشن ایم اے وحید ودیگر موجودتھے۔

جواب چھوڑیں