بودھ گیا دھماکے کیس‘ پانچوں خاطیوں کو عمرقید

این آئی اے عدالت نے یہاں جمعہ کے دن بودھ گیا کے مہابودھی مندر میں سلسلہ وار دھماکوں (2013) کے تمام خاطیوں کو عمرقید کی سزا سنائی۔ ایک وکیل نے یہ بات بتائی۔ این آئی اے عدالت کے جسٹس منوج کمار سنہا نے مئی میں عمر صدیقی‘ اظہرالدین صدیقی‘ کوثر علی‘ مجیب اللہ انصاری اور امتیاز انصاری کو خاطی قراردیا تھا ۔این آئی اے کے وکیل للن کمار سنہا نے پٹنہ میں اخباری نمائندوں کو بتایا کہ اس کیس میں زیادہ سے زیادہ عمرقید کی سزا دی جاسکتی ہے۔ این آئی اے چارج شیٹ میں کہا گیا تھا کہ 7 جولائی 2013 کے دھماکے مقامی و بیرونی یاتریوں بشمول بدھسٹوں کو ہلاک کرنے کے مقصد سے کئے گئے تھے تاکہ دہشت پھیلے۔ 13 بم نصب کئے گئے تھے جن میں لگ بھگ 10 پھٹ پڑے تھے۔ 3 کارآمد بموں کو سیکوریٹی فورسس نے بعدازاں ناکارہ کردیا تھا۔ 5 افراد بشمول 2 راہب زخمی ہوئے تھے۔ بودھ گیا مندر یونیسکو ورلڈ ہیریٹیج سائٹ ہے جہاں گوتم بدھ کو لگ بھگ 2500 برس قبل عرفان ملا تھا۔

جواب چھوڑیں