خواجہ آصف‘ انتخابات میں مقابلہ کیلئے اہل

پاکستان کی سپریم کورٹ نے آج ہائیکورٹ کے اس فیصلہ کو مسترد کردیا جس کے تحت سابق وزیرخارجہ خواجہ محمد آصف کو نااہل قرار دیا گیا تھا۔ سپریم کورٹ کے اس فیصلہ کے بعد محمد آصف آئندہ ہونے والے انتخابات میں مقابلہ کرنے کے اہل ہوں گے۔ 27اپریل کو خواجہ محمد آصف کو اسلام آباد ہائیکورٹ کی جانب سے نااہل قرار دیا گیا تھا کیونکہ وہ یو اے ای کمپنی میں ملازمت اور ماہانہ آمدنی کی وصولی کے تعلق سے حکام کو واقف کروانے میں ناکام ہوگئے تھے۔ خواجہ محمد آصف نے اس ماہ کے اوائل میں سپریم کورٹ میں چیالنج کیا تھا۔ جسٹس عمر عطا باندیال کی زیر قیادت 3رکنی بنچ نے اسلام آباد ہائیکورٹ کی جانب سے پی ایم ایل۔این قائد آصف کو نااہل قرار دئے گئے فیصلہ کو کالعدم قرار دیا۔ ہائیکورٹ نے فیصلہ دیتے ہوئے محمد آصف کو تا حیات انتخابات میں حصہ لینے کیلئے نااہل قرار دیا تھا لیکن سپریم کورٹ میں ہائیکورٹ کے اس فیصلہ کو چیالنج کرتے ہوئے پیش کردہ درخو است کے بعد سپریم کورٹ نے ہائیکورٹ کے فیصلہ کو مسترد کردیا اور اس رائے کا اظہار کیا کہ کسی بھی سیاستداں کے کیئر کو نقصان پہنچانہ غیر منصافانہ ہوگا۔ سپریم کورٹ نے اس رائے کا بھی اظہار کیا ہے کہ محض اثاثہ جات کے تعلق سے انکشاف نہ کرنے پر کسی بھی سیاستداں کے خلاف اس طرح کا فیصلہ مناسب نہیں ہوگا۔ عمر عطا باندیال نے اس رائے کا اظہار کیا ہے کہ درخواست گذار کی جانب سے بیرونی ممالک سے حاصل ہونے والی تنخواہ کے تعلق سے جو انکشاف کیا گیا ہے وہ کافی ہے۔ اس لئے کسی کے کیئریر کو نقصان پہنچانا منصفانہ نہیں ہوگا۔ پاکستان تحریک انصاف کے قائد محمد عثمان ڈار نے درخواست پیش کرتے ہوئے خواجہ محمد آصف کو نااہل قرار دینے کی التجا کی تھی لیکن اب محمد عثمان ڈار نے سپریم کورٹ کے اس فیصلہ کو قبول کرلیا اور کہا کہ وہ انتخابات میں آصف کو شکست دیں گے۔ 2013میں ہوئے انتخابات میں آصف نے ڈار کو شکست دی تھی۔ دونوں کا تعلق سیالکوٹ پنجاب سے ہے۔

جواب چھوڑیں