سعودی عرب میں حاجیوں کیلئے بہتر انتظامات کا تیقن :مسیح اللہ خان

صدر نشین تلنگانہ اسٹیٹ حج کمیٹی محمد مسیح اللہ خان نے آج جدہ سعودی عرب میں قونصل جنرل انڈیا متعینہ جدہ ایم نور رحمان شیخ سے ملاقات کی اور ان سے حج سیزن 2018کے دوران ہندوستانی خصوصاً تلنگانہ کے عازمین حج کو فراہم کی جانے والی سہولتوں اور انتظامات کے بارے میں بات چیت کی۔ قونصل جنرل جدہ نے بتایا کہ ہر سال کی طرح اس سال بھی بہترین انتظامات کئے جائیں گے اور اس بات کی بھر پور کوشش کی جائے گی کہ عازمین کو کسی قسم کی دشواری نہ ہونے پائے ۔ انہوں نے بتایا کہ عزیزیہ زمرہ اور رباط کے عازمین کو پکوان کی سہولت حاصل رہے گی جبکہ گرین زمرہ کے عازمین کے علاوہ مدینہ منورہ میں پکوان کی سہولت نہیں رہے گی۔ مسیح اللہ خان بعزم عمرہ‘ حج کمیٹی کے رکن ایم اے شفیع کے ہمراہ مکہ مکرمہ روانہ ہوئے ۔ عمرہ کی ادائیگی کے بعد انہوں نے جدہ میں قونصل جنرل سے ملاقات کی۔ اس موقع پر رکن حج کمیٹی کے علاوہ ڈپٹی قونصل جنرل محمد شاہد عالم بھی موجود تھے ۔ صدر نشین حج کمیٹی نے قونصل جنرل کے ساتھ بات چیت کے دوران دوسری مرتبہ مکہ معظمہ کا سفر کرنے والے عازمین سے ویزا فیس کے طور پر 2000سعودی ریال کی وصولی کے بارے میں بھی تبادلہ خیال کیا اور کہا کہ اس تعلق سے عازمین میں کافی بے چینی پائی جاتی ہے ۔قونصل جنرل نے بتایا کہ سعودی حکام کی ہدایات کے مطابق جن عازمین نے پہلے عمرہ کیا ہے اگر وہ دوبارہ عمرہ کے لئے آئیں تو ان سے دو ہزار ریال کی رقم وصول کی جائے گی ‘ اگر وہ حج پر آئیں تو ان سے یہ رقم وصول نہیں کی جائے گی۔ اسی طرح پہلے حج کرنے والے عازمین حج سے بھی یہ رقم وصول کی جائے گی۔ صدر نشین حج کمیٹی نے بتایا کہ انہوں نے اور ایم اے شفیع نے قونصل جنرل سے عازمین کو سم کارڈ کی سربراہی کے تعلق سے بھی بات چیت کی جس پر انہوں نے بتایاکہ تمام عازمین کو موبائیلی کمپنی کا سم کارڈ ان کی روانگی سے قبل ہی حیدرآباد میں سربراہ کئے جائیں گے اور سم کارڈ میں تین ریال کا بیالنس رہے گا۔

جواب چھوڑیں