ٹیکس چوری اور بے نامی معاملتیں۔ جانکاری دینے پر 5 کروڑ تک کا انعام

حکومت نے جمعہ کے دن 3 انعامی اسکیموں کا اعلان کیا جن کے تحت ٹیکس چوری اور بے نامی معاملتوں و جائیدادوں کی جانکاری دینے والے کو 5 کروڑ روپے تک کا انعام مل سکتا ہے۔ وزارتِ فینانس نے کہا کہ بڑی ٹیکس چوری اور بیرون ِ ملک اثاثوں کی ٹھوس جانکاری دینے والے کو 5 کروڑ روپے تک کا انعام مل سکتا ہے جبکہ ہندوستان میں ٹیکس چوری کی جانکاری دینے پر 50 لاکھ روپے کا اعظم ترین انعام ملے گا۔ بے نامی معاملتوں اور جائیدادوں کی جانکاری دینے پر ایک کروڑ روپے تک کا انعام حاصل ہوگا۔ حکومت نے قبل ازیں کالادھن ٹیکس قانون 2015 متعارف کیا تھا تاکہ ہندوستان میں ٹیکس کے دائرہ میں آنے والوں کے بیرونی ملکوں میں اثاثوں اور آمدنی کی تحقیقات کی جائیں۔ سرکاری بیان میں کہا گیا کہ نئی انعامی اسکیم میں 5کروڑ روپے تک کے انعام کی بات اس لئے کی گئی ہے کہ جانکاری دینے والے کو وہ پرکشش لگے۔ محکمہ انکم ٹیکس نے بھی انکم ٹیکس کی جانکاری دینے والوں کو انعام کی اسکیم پر نظرثانی کی ہے۔ اس کی نئی اسکیم کے مطابق ہندوستان میں بڑی ٹیکس چوری کی ٹھوس جانکاری دینے والے کو 50 لاکھ روپے تک کا انعام ملے گا۔ وزارت ِ فینانس نے کہا کہ بے نامی معاملتوں کی جانکاری دینے والوں کو انعام کی اسکیم کا مقصد ایسے لوگوں کی حوصلہ افزائی کرنا ہے جو بے نامی معاملتوں اور جائیدادوں کی جانکاری دیتے ہیں۔ کئی کیسس میں پایا گیا کہ کالادھن دوسروں کے نام پر جائیداد میں لگادیا گیا۔ ایسے معاملات میں ٹھوس جانکاری دینے پر ایک کروڑ روپے تک کا انعام ملے گا۔ محکمہ انکم ٹیکس کو اس سے کالادھن کا پتہ چلانے اور ٹیکس چوری گھٹانے میں مدد ملے گی۔ غیرملکی بھی یہ انعام حاصل کرنے کے حقدار ہوں گے۔ جانکاری دینے والوں کی شناخت ظاہر نہیں کی جائے گی۔ وزارت ِ فینانس نے کہا کہ پوری رازداری برتی جائے گی۔

جواب چھوڑیں