ٹرمپ ۔ کِم ملاقات‘ ہند و پاک کیلئے مثال بنے: شہباز شریف

پاکستان مسلم لیگ نواز کے صدر شہباز شریف نے کہا ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کو جامع امن بات چیت بحال کرنی چاہئے۔ دونوں ممالک کو امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ اور شمالی کوریائی قائد کِم جونگ اُن کی تاریخی سنگاپور چوٹی ملاقات سے کچھ سیکھنا چاہئے۔ ہندوستان کے تعلق سے شاذونادر بیان میں برطرف وزیراعظم پاکستان نواز شریف کے بھائی نے کہا کہ ٹرمپ اور کِم کی کل کی چوٹی ملاقات‘ ایک دوسرے سے الجھے دو پڑوسیوں کے لئے اچھی نظیر بننی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ اور شمالی کوریا‘ نیوکلیر ٹکراؤ سے پیچھے ہٹ سکتے ہیں تو پھر کوئی وجہ نہیں کہ ہندوستان اور پاکستان ایسا نہ کریں۔ یہ ہمارے خطہ میں جامع بات چیت کا وقت ہے۔ بین الاقوامی برادری کو افغانستان میں امن مساعی پر توجہ دینی چاہئے۔ کشمیر پر ہند۔ پاک بات چیت بھی بحال ہونی چاہئے تاکہ دیرینہ تصفیہ طلب مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہوجائے۔ پاکستان میں کئی سیاسی پنڈت مانتے ہیں کہ ہندوستان سے تعلقات معمول پر لانے کی کوشش نواز شریف کی برطرفی کی ایک وجہ ہے۔ شہباز شریف نے جو برسراقتدار پی ایم ایل این کے امیدوار ِ وزارت ِ عظمیٰ ہیں‘ ہندوستان سے کہا کہ وہ ماضی کو پیچھے چھوڑکر نئی شروعات کرے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ اور شمالی کوریا بات چیت‘ پاک۔ ہند کے لئے رول ماڈل بننی چاہئے۔

جواب چھوڑیں