وزیر خارجہ امارات کے دورۂ ہند کا آغاز 

 وزیر خارجہ متحدہ عرب امارات شیخ عبداللہ بن زاید النیہان آج ہندوستان کے ایک ہفتہ طویل دورہ پر یہاں پہنچے۔ وہ 6 ہندوستانی شہروں کا دورہ کریںگے اور وزیر خارجہ شریمتی سشما سوراج سے بات چیت کریںگے۔ یہ مذاکرات توانائی اور تجارت کے میدان میں تعاون کو فروغ دینے پر مرکوز رہیںگے ۔ عبداللہ بن زاید النیہان ، نئی دہلی ، حیدرآباد ، احمد آباد ، ممبئی ، چینائی اور بنگلورو کا دورہ کریںگے۔ وہ کل (25 جون کو) کو یہاں شریمتی سشما سوراج کے ساتھ وفود کے سطح کی بات چیت کریںگے ، جس کے بعد توقع ہے کہ مختلف شعبہ جات میں معاہدات پر دستخط ہوںگے۔ ابوظبی کی نیشنل آئی کمپنی (ADNOC)، سعودی عربین آئیل کمپنی اور ہندوستان کی وزارتِ پٹرولیم و قدرتی گیس کے مابین بھی ایک سہ فریقی معاہدہ پر دستخط متوقع ہیں۔ مہمان قائد ، کل وزیر اعظم نریندر مودی سے بھی ملاقات کریںگے۔ وہ یہاں انٹرنیشنل کونسل برائے عالمی امور کے بین العمل اجلاس میں بھی شرکت کریںگے اور اکشر دھام مندر کا دورہ کریںگے ۔ وہ چہار شنبہ (27 جون کو) احمد آباد کے لیے روانہ ہوںگے ، جہاں وہ سابرمتی آشرم کا دورہ کریںگے اور سدی سید مسجد بھی جائیںگے ۔ احمد آباد میں ان کی دیگر مصروفیات بھی رہیںگی ۔ اِس شہر سے وہ ممبئی کے لیے پرواز کریںگے ، جہاں وہ مشہور ہندوستانی کمپنیوں کے 10-15 چنندہ چیف اگزیکٹیو آفیسرس کے ساتھ تجارتی موضوع پر گول میز مذاکرات میں حصہ لیںگے۔ ممبئی میں توقع ہے کہ سنٹرل بینک آف یونائیٹیڈ عرب ایماریٹس اور ریزرو بینک آف انڈیا کے درمیان کرنسی کے تبادلہ سے متعلق تعاون پر ایک یادداشت ِ مفاہمت کا تبادلہ ہوگا۔ وہ 30 جون کو وطن واپسی سے قبل حیدرآباد ، چینائی اور بنگلورو کا دورہ کریںگے۔ اپنے دورہ کے آخری منزل بنگلورو میں وہ انڈین اسپیس ریسرچ آرگنائزیشن (اسرو) کا دورہ کریںگے۔ یہاں یہ تذکرہ مناسب ہوگا کہ وزیر اعظم ہند مسٹر نریندر مودی نے 2015ء میں عرب امارات کا دورہ کیا تھا اور دونوں ممالک نے اپنے تعلقات کو ایک جامع فوجی شراکت داری کی سطح تک بلند کرنے کا فیصلہ کیا تھا ۔ وزیر اعظم نے گذشتہ فروری میں بھی امارات کا ایک اور کامیاب دورہ کیا تھا۔ متحدہ عرب امارات ، ہندوستان کا تیسرا سب سے بڑا تجارتی شراکت دار ہے اور ہندوستان کی توانائی کی ضروریات کی تکمیل کرنے والا چھٹا سب سے بڑا سربراہ کنندہ ملک ہے۔

جواب چھوڑیں