ایک سال کے اندر ایرانی نظام کا سقوط ہو جائے گا : مشیر ٹرمپ

امریکی صدر ٹرمپ کے قانونی مشیر روڈی جولیانی کے مطابق “اگر ہم یہ کہیں کہ ایرانی نظام کا اختتام قریب ہے تو یہ حقیقت سے دْور نہ ہو گا”۔ انہوں نے کہا کہ تہران میں نظام کا سقوط ایک سال کے دوران واقع ہو جائے گا۔ہفتے کیروز “مجاہدینِ خلق” کے زیر قیادت ایرانی قومی کونسل برائے مزاحمت کی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جولیانی کا کہنا تھا کہ “ایران میں مظاہرین کے خلاف کریک ڈاؤن اور تشدد اور ہلاکتوں کی تعداد یہ باور کراتی ہے کہ آزادی بہت قریب ہے اور اس نظام کا سقوط نا گزیر ہے۔جولیانی کے مطابق 2009ء میں ایسا ہو سکتا تھا تاہم امریکی حکومت اْس وقت ایرانی عوام کے احتجاج کے ساتھ نہیں کھڑی ہوئی، تاہم اب امریکی صدر کی جانب سے ایران میں مظاہرین کے لیے تائید کا اظہار کیا گیا ہے۔ٹرمپ کے مشیر نے یورپی ممالک کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا جنہوں نے ایرانی نظام کے ساتھ تجارتی اور اقتصادی تعلقات برقرار رکھے ہوئے ہیں۔ جولیانی کے مطابق یورپی ممالک ایسے نظام کو رقوم کی ادائیگی کر رہے ہیں جو خواتین اور بچوں کو حقوق سے محروم کرتا ہے اور لوگوں کو قتل کر رہا ہے محض اس واسطے کہ اْن کا نظریہ یا مذہبی پس منظر مختلف ہے۔

جواب چھوڑیں