مہاراشٹرا میں ’بچہ چور‘ہونے کے شبہ پر پانچ افراد کو ہلاک کردیا گیا

مہاراشٹرا کے ضلع دھولے میں ایک ہجوم نے اس شبہ پر پانچ افراد کو آج مار مار کر ہلاک کردیا کہ وہ ’’بچہ چوری کرنے والی ٹولی‘‘ کا حصہ تھے ۔ پولیس عہدیداروں نے یہ بات بتائی اور کہا کہ یہ واقعہ ضلع دھورے کے رین پارہ مقام پر آج دن میں لگ بھگ 11:30 بجے پیش آیا۔ پولیس نے بتایا کہ مذکورہ پانچ افراد بعض دیگر افراد کے ساتھ قبائلی غلبہ والے رین پاڑہ قصبہ میں ایک ریاستی ٹرانسپورٹ بس سے اترتے ہوئے دیکھے گئے تھے ۔ جب اُن میں سے ایک شخص نے ایک کمسن بچی سے بات کرنے کی کوشش کی تو دیہی عوام نے جو وہاں ہفتہ واری اتوار بازار کے لیے جمع ہوئے تھے ، اُن مذکورہ پانچ افراد پر جھپٹ پڑے ۔ مقامی پولیس اسٹیشن کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ اس حملہ کے بعد پانچ افراد فوت ہوگئے ، جن کی ہنوز شناخت نہیں ہوسکی ۔ اس واقعہ میں دو پولیس والے بھی زخمی ہوئے ۔ اس سلسلہ میں پندرہ افراد کو تحویل میں لے لیا گیا ہے۔ نعشوں کو دیہی اسپتال منتقل کردیا گیا ہے اور پولیس ٹیموں نے علاقہ رین پاڑہ میں چوکسی اختیار کر رکھی ہے ۔ پولیس نے بتایا کہ گذشتہ چند روز سے مذکورہ علاقہ میں یہ افواہیں گشت کر رہی تھیں کہ بچوں کو اٹھا لے جانے والی ایک ٹولی اس علاقہ میں سرگرم ہے۔ اسی دوران مہاراشٹرا کے منسٹر آف اسٹیٹ برائے امورِ داخلہ دیپک کیسرکر نے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ سوشل میڈیا پر پھیلائی جانے والی افواہوں پر بھروسہ نہ کریں۔

جواب چھوڑیں