تعلیمی اداروں میں 2کروڑپودے لگانے کانشانہ :ڈپٹی چیف منسٹرکڈیم سری ہری

ڈپٹی چیف منسٹرتلنگانہ کڈیم سری ہری نے ریاست کے تمام ڈی ای اوز کوہدایت دی کہ وہ ہریتاہارم پروگرام کوکامیابی کے ساتھ روبعمل لائیں اوراس پروگرام میںطلبہ کی شراکت داری کویقینی بنانے کی ممکنہ مساعی انجام دیں۔ کڈیم سری ہری نے جن کے پاس تعلیم کا قلمدان بھی ہے‘ کہاکہ سرکاری تعلیمی اداروں کے احاطہ میں تقریباً2کروڑ پودے لگانے کامنصوبہ تیارکیاگیاہے۔ دوکروڑ پودے لگانے کے لئے بچوں کومقامات کی نشاندہی کرایں۔ سوچھ اسکول اور گرین اسکول پروگرام کے دوران ریاست کے تمام اسکولوں اور تعلیمی اداروں میں 2کروڑ پودے لگایا جاناچاہئے ۔ شجرکاری کے ساتھ ساتھ ان پودوں کو روزانہ پانی دینا اوران کی حفاظت بھی کرنا ضروری ہے ۔ سکریٹریٹ میں محکمہ تعلیمات اور فاریسٹ کے اعلیٰ عہدیداروں کے ساتھ جائزہ اجلاس کے بعد ڈی ای اوز سے بذریعہ ٹیلی کانفرنس بات چیت کرتے ہوئے انہوںنے یہ بات کہی۔ کڈیم سری ہری نے مزید کہاکہ حکومت ‘ شجرکاری کے لئے مقامات کی نشاندہی کرے گی ۔ انہوں نے کہاکہ شجرکاری پروگرام کے دوران کوڈا کنڈلہ ‘دنڈے پلی اورسنگاریڈی کے اسکولوں کو بطورماڈل مدنظررکھناچاہئے ۔ انہوں نے کہاکہ محکمہ جنگلات اورتعلیمات کے عہدیداروں کوریاست کے سرکاری اسکولوںاورتعلیمی اداروںمیں ایک کروڑ پودے لگانے کے اقدامات کرناچاہئے جبکہ مزید ایک کروڑ پودوں کوکمپاونڈوالس کے اطراف جھنڈکی شکل میں لگاناچاہئے ۔ گرین بریگیڈس کو یونیفارمس حوالے کئے جائیں ۔ 40لاکھ طلبہ میں پھل دار درختوں کے پودے حوالے کئے جانا چاہئے تاکہ ان پودوں کواسکولس میں لگایا جاسکے ۔ ان پودوں کی حفاظت کے لئے ٹری گارڈ لگائے جائیں اورپودوں کو روزانہ پانی دینے کے لئے ایک ورکرکی خدمات حاصل کی جانی چاہئے ۔ اسکول سے لیکر انجینئرنگ کالج کے سطح تک 40لاکھ بچے زیرتعلیم ہیں۔ ان تمام طلبہ کو اس ہریتاہارم پروگرام میں شراکت دار بناناچاہئے ۔ ہرایک طالب علم کو پھل یاپھولوں کے 5پودے لگاناچاہئے ۔ توقع ہے کہ اس پروگرام میں 25لاکھ طلبہ شرکت کریں گے۔ اس موقع پرپرنسپل سکریٹری تعلیمات رنجیوآرچاریہ اوردیگر موجودتھے۔

جواب چھوڑیں