بنگلہ دیش میں روہنگیا پناہ گزینوں کو نئے شناختی کارڈ کااجرا ء

بنگلہ دیش میں پناہ لئے روہنگیا مہاجرین کو عنقریب شناختی کارڈ دیاجائے گا جبکہ بہت سے لوگوں کو پہلی مرتبہ یہ کارڈ حاصل ہورہاہے جو کسی بھی فرد کا ایک شناختی دستاویز ہے جس کے نتیجہ میں انہیں مزید تحفظ حاصل ہوجائے گا ۔ اقوام متحدہ کی پناہ گزیں ایجنسی نے یہ بات بتائی۔ جون کے آخر میں شروع ہوئی یہ کاروائی تکمیل کے لیے 6 ماہ لے گی ۔ اقوام متحدہ ہائی کمشنر برائے پناہ گزیں یواین ایچ سی آر دفتر کے ترجمان چرلی ایکسی نے بتایا کہ ا س سے تحفظ شناخت انتظام دستاویزی تیاری امداد کی فراہمی آبادیاتی اعداد و شمار اور بالآخر 9لاکھ پناہ گزینوں کے لیے ایک حل فراہم ہوگا جو میانمار سے جبری طور پر بے گھر ہونے کے بعد مسلسل لہر کی شکل میں بنگلہ دیش میں پہنچے ہیں جبکہ اس اقدام سے ایک متحدہ ڈیٹا بیس تقویت حاصل ہوگی ۔ گذشتہ سال اگست سے 7لاکھ 20ہزار سے زائد پناہ گزیں وہاں سے فرار ہوئے ہیں جبکہ یہ واقعہ دنیا کا سب سے بڑا اور انتہائی تیز رفتار پناہ گزیں ایمرجنسی رہی ہے جو کئی دہوں کے دوران پہلی مرتبہ وقوع میں آئی ہے ۔انہوں نے بتایا کہ جانچ کی یہ کاروائی پناہ گزینوں کی شناخت قائم کرنے اور میانمار میں ان کے پیدائشی مقامات کااظہار کرے گی ۔ اس سے رضا کارانہ طور پر ان کے گھر لوٹنے کے اقدام کا تحفظ ہوگا تاہم یہ کاروائی اگر لوٹنے کے خواہاں افراد کے اس فیصلہ پر منحصر ہے کہ وہاں کے میانمار کے حالات ان کی واپسی کے لیے مناسب ہیں ۔

جواب چھوڑیں