جینت سنہانے مبارک باد دینے کو جائز ٹھہرایا

بھارتیہ جنتاپارٹی کے لیڈر اور مرکزی وزیر جینت سنہانے رام گڑھ میں پیٹ پیٹ کر ایک شخص کو ہلاک کئے جانے کے معاملہ کے ایک ملزم کو ‘شبھ کامنائیں ‘دینے کے اپنے قدم کا دفاع کرتے ہوئے آج کہاکہ تیزی سے مقدمہ نمٹانے والی عدالت کے ذریعہ سبھی ملزمین کو عمرقید کی سزادینا غلط ۔ سنہانے ٹویٹ کیاکہ وہ معاملہ کے ہر ملزم کو عمرقید کی سزاسنائے جانے پر باربار شبہ ظاہرکرتے رہے ہیں ۔انھیں خوشی ہے کہ رانچی ہائی کورٹ اب نچلی عدالت کے فیصلے کے خلاف سماعت کریگی۔انھوں نے کہاکہ ہائی کورٹ نے ملزم کی سزاپر روک لگادی ہے اور اسے ضمانت پر رہاکیاہے ۔بی جے پی لیڈر نے کہاکہ وہ سبھی طرح کے تشددکی مخالفت کرتے ہیں ۔جمہوریت میں قانون بالاترہے ۔کسی بھی غیر قانونی سرگرمی سے سختی سے نمٹاجاناچاہئے۔انھوں نے کہاکہ ملزم ضمانت پر رہاہونے کے بعد انکے گھرآیاتھا اور انھوں نے اسے مبارک باد دی ۔قانونی کارروائی جاری رہنی چاہئے اور قصورواروں کو سزاملنی چاہئے لیکن جو بے قصور ہیں انھیں رہاکیاجاناچاہئے ۔

جواب چھوڑیں