نواز شریف‘ مریم اور کیپٹن صفدر کیخلاف وارنٹ گرفتاری جاری

احتساب عدالت نے نواز شریف، مریم اور کیپٹن (ر) صفدر کے وارنٹ گرفتاری جاری کردیے۔قومی احتساب بیورو (نیب) نے احتساب عدالت سے نواز شریف، مریم اور کیپٹن صفدر (ر) کے وارنٹ گرفتاری حاصل کرلیے ہیں۔ نیب کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا کہ ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ احتساب عدالت سے حاصل کرلیا ہے اور گرفتاری کے وارنٹ بھی حاصل کرلئے ہیں۔ قانون کے مطابق نواز شریف، مریم نواز، کیپٹن ریٹائرڈ صفدر، حسن اور حسین نواز کی گرفتاری کے لئے لائحہ عمل کی تیاری شروع کردی گئی ہے۔ سابق وزیراعظم نوازشریف نے لندن فلیٹس ریفرنس میں سزا سنائے جانے کے بعد وطن واپس آنے کا اعلان کیا ہے. تاہم ,ان کا کہنا ہے کہ اہلیہ کے ہوش میں آتے ہی پاکستان آجاؤں گا۔نواز شریف نے کہا کہ ’’چند جرنیل اور ججز مل کر قوم پر غلامی مسلط کردیتے ہیں۔ لیکن، میں اس کے خلاف جدوجہد جاری رکھوں گا‘‘۔فیصلہ سنائے جانے کے بعد لندن میں مریم نواز کے ہمراہ نیوز کانفرنس میں نواز شریف کا کہنا تھا کہ ’’یہ سزائیں میری جدوجہد کا راستہ نہیں روک سکتیں اور میں اپنی جدوجہد جیل میں بھی جاری رکھوں گا‘‘۔مسلم لیگ(ن) کے قائد کا کہنا تھا کہ ’’میرے خلاف ہر ہتھکنڈہ اپنایا گیا جس کی کوئی مثال نہیں ملتی۔ جس جدوجہد کا میں نے آغاز کیا اس میں اسی طرح کے فیصلے آتے ہیں اور سزائیں بھی ملتی ہیں، کوئی قید ہوتا ہے تو کوئی پھانسی پاتا ہے اور کوئی تاحیات نااہل قرار دیا جاتا ہے تو کسی کو وزارت عظمیٰ سے ہٹایا جاتا ہے۔ پاکستان میں سیاسی و مذہبی جماعتوں سے دھرنے دلوائے جاتے ہیں، وزیر اعظم کو زبردستی مستعفی ہونے کا کہا جاتا ہے، سیاسی پارٹیوں کی توڑ پھوڑ کے جرم کا ارتقاب ہوتا ہے، ارکان کی وفاداریاں بندوق کے زور پر تبدیل کرائی جاتی ہیں‘‘۔سابق وزیر اعظم نے پاکستانی خفیہ ادارے آئی ایس آئی کا نام لے کر الزام عائد کیا کہ ’’مسلم لیگ(ن) کے ٹکٹ ہولڈرز پر تشدد کیا جاتا ہے اور بعد میں محکمہ زراعت کا نام لیا جاتا ہے، میڈیا پر پابندیاں لگا دی جاتی ہیں جبکہ ایک صحافی کی تو لاش ہی دریا سے ملتی ہے۔‘‘

جواب چھوڑیں