شرت کے خاندان کو ممکنہ مدد فراہم کرنے سشماسوراج کا تیقن

وزیر خارجہ سشما سوراج نے امریکی شہر کنساس میں ہندوستانی طالب علم کی ہلاکت پر گہرے دکھ کا اظہار کیا اور مہلوک طالبعلم کے افراد خاندان کو ہر طرح کی ضروری مدد فراہم کرنے کا تیقن دیا ۔ بتایا جاتا ہے کہ رہزنوں کی ٹولی کی فائرنگ میں تلنگانہ کے طالبعلم شرت ہلاک ہوگیا ۔ کنساس میں عہدیداروں کے بموجب شرت کپو، جو تلنگانہ کا متوطن بتایا گیا ہے ، ایک ریسٹورنٹ میں رہزنوں کی ٹولی کی فائرنگ میں مارا گیا ، جہاں وہ کام کرتاتھا ۔ یہ واقعہ جمعہ کو پیش آیا ۔ سشما سوراج نے ٹویٹ کرتے ہوئے کنساس واقعہ پر گہرے دکھ کا اظہار کیا اور کہا کہ مہلوک طالبعلم کے افراد خاندان سے تعزیت کرتی ہیں۔ ہم وہاں کی پولیس کے ربط میں ہیں اور غمزدہ افراد خاندان کو ہر ممکن ضروری مدد فراہم کریں گے ۔ تلنگانہ کے ضلع ورنگل کا رہنے والا شرت کپو ایک سافٹ ویر انجینئر بتایا گیا ہے وہ، اعلیٰ تعلیم( پی جی ) کیلئے جنوری میں امریکہ کے شہر کنساس روانہ ہوا تھا ۔ قونصلیٹ جنرل آف انڈیا شکاگو نے کل ٹوئٹ کرتے ہوئے بتایا کہ وہ شرت کے افراد خاندان اور پولیس کے ساتھ مسلسل ربط رکھے ہوئے ہیں کنساس سٹی پولیس نے ریسٹورنٹ میں فائرنگ سے قبل مشتبہ افراد کی نقل وحرکت پر مشتمل ایک مختصر ویڈیو جاری کرتے ہوئے مشتبہ افراد کے بارے میں اطلاع دینے والوں کو 10 ہزار امریکی ڈالر انعام دینے کا اعلان کیا ہے ۔یو این آئی کے بموجب وزیر خارجہ سشما سوراج نے اتوار کو بتایا کہ وہ شرت کپو کے والد رام موہن ر یڈی سے بات چیت کرچکی ہیں۔ شرت کو امریکی شہر کنساس میں گولی مارکر ہلاک کردیا گیا تھا ۔ سشما سوراج نے ریڈی کو اس بات کا تیقن دیا کہ شرت کی نعش کو جتنا جلد ہوسکے ، وطن لایا جائے گا ۔ انہوںنے مزید کہا کہ شرت کے افراد خاندان اگر کنساس جانے کے خواہش مندہیں تو مرکزی حکومت، انہیں ویزا فراہم کرے گی ۔ ٹوئٹ کرتے ہوئے سشما سوراج نے یہ بات بتائی ۔

جواب چھوڑیں