یمن کے صوبہ صعدہ میں نئے ٹھکانے آزاد۔72 گھنٹوں میں 341 حوثی باغی ہلاک:عرب اتحاد

یمن میں سرکاری فوج نے ہفتے کی شب صعدہ صوبہ میں حوثی ملیشیا کے ساتھ شدید جھڑپوں کے بعد مشرقی ضلع کتاف میں نئے ٹھکانوں کو آزاد کرا لیا۔”العربیہ” کے نمائندہ کے مطابق یمنی فوج نے عرب اتحاد کی معاونت سے الزور اور الخشباء کے پہاڑی سلسلہ پر کنٹرول حاصل کر لیا۔ اس دوران صعدہ کے مشرق میں العطفین اور الملیل کے محاذوں پر باغیوں کی امدادی سپلائی لائن منقطع کر دی گئی۔ذرائع کے مطابق یمنی فوج کی کارروائی کے نتیجے میں 10 حوثی ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے۔ اس کے علاوہ مختلف نوعیت کے ہتھیار اور عسکری گاڑیاں بھی قبضے میں لے لی گئیں۔ادھر یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد نے گزشتہ تین روز کے دوران یمنی فوج کی پیش قدمی جاری رہنے کی تصدیق کی ، اس دوران باغی ملیشیا کو بھاری نقصان سے دوچار ہونا پڑا۔عرب اتحاد کے مطابق گزشتہ 72 گھنٹوں کے دوران حوثی ملیشیا کے 341 ارکان مارے گئے۔عسکری کارروائیوں کے نتیجے میں صعدہ کے دو ضلعوں حیدان اور رازح میں حوثیوں کے رابطے کے نظام کو بھی تباہ کر دیا گیا۔یمن میں آئینی حکومت کی حمایت میں برسرپیکار عرب عسکری اتحاد نے کہا ہے کہ تین روز سے یمن میں جاری لڑائی کے دوران ایران نواز حوثی باغیوں کو بے پناہ جانی نقصان پہنچایا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق عسکری اتحاد کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ 72 گھنٹوں کے دوران یمن کے مختلف محاذوں پر 341 حوثی جنگجوؤں کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا۔عرب اتحاد نے ایک بیان میں کہا ہے کہ حوثی ملیشیا کے فوجی مواصلاتی نظام اور غیر ملکی ماہرین کی مدد سے چلائے جانے والے ٹیکنالوجی کے جدید آلات کو مکمل طور پر تباہ کردیا گیا ہے۔عرب اتحاد نے یہ بات زور دے کر کہی ہے کہ وہ ایک دہشت گرد تنظیم کو اپنے پاس اس طرح کے جدید اور اعلیٰ معیار کے آلات رکھنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ اس نے وضاحت نے کی ہے کہ اس نے جس ہدف کو نشانہ بنایا ہے ، وہ ایک فوجی تنصیب تھی اور اس امر کی خفیہ کارروائیوں اور استعمال کیے گئے جوابی فوجی ہتھیاروں سے بھی تصدیق ہوئی ہے۔

جواب چھوڑیں