اسمارٹ پارکنگ مینجمنٹ کا فروغ:این وی ایس ریڈی

تلنگانہ کے بلدی نظم ونسق اور شہری ترقیات کے وزیر کے ٹی راما رائو کی ہدایت پر کہ شہر میں میٹرو ریل اسٹیشنوں کیلئے عصری اسمارٹ پارکنگ ٹکنالوجیز لائی جائیں۔ حیدرآباد میٹرو ریل لمیٹیڈ (ایچ ایم آر ایل) نے عوامی خانگی شراکت داری (پی پی پی) طریقہ عمل کے تحت میاں پور۔ امیر پیٹ۔ ناگول کی آپریشنل 30کلومیٹر پٹی پر 24میٹرو ریل اسٹیشنوں پر آئی ایس پی ایم ایس (انٹگریٹیڈ اسمارٹ پارکنگ مینجمنٹ سسٹم) کے فروغ کیلئے بولیوں کی منصوبہ بندی کی ہے اور انہیں قطعیت دی ہے۔ تین کمپنیوں نے بولیاں دی تھیں۔ مسرز زروٹی سولوشنس (مسرزاگائیل پارکنگ سولیوشنس پرائیوٹ لمیٹیڈ کے فنی اشتراک کے ساتھ) کو بطور لائسنسی منتخب کرلیا گیا۔ ایچ ایم آر ایل کے مینیجنگ ڈائرکٹر این وی ایس ریڈی نے یہ بات بتائی۔ مسرز زروٹی سولیوشنس تقریباً 8کروڑ روپئے صرف کرے گی اور ان تمام 24میٹرو اسٹیشنوں پر آن اسٹریٹ اسمارٹ پارکنگ کی عالمی درجہ کی سہولتیں تخلیق کرے گی۔ وہ ان کی نگہداشت کے انتظامات دیکھے گی‘ انہیں چلائے گی۔ اس کے علاوہ ایچ ایم آر ایل کو 20سالہ مدت کیلئے بطور لائسنس فیس 7کروڑ روپئے ادا کرے گی۔ ریڈی نے آج یہاں ایک ریلیز میں یہ بات بتائی۔پارک حیدرآباد برانڈ نام سے ایچ ایم آر ایل کا انٹگریٹیڈ اسمارٹ پارکنگ مینجمنٹ سسٹم ایک جامع ڈیجیٹل سولیوشن پر مبنی ہوگا جو زیادہ انسانی مداخلت کے بغیر پارکنگ کے تمام مسائل سے نمٹے گا۔ اس کا ’’سٹیزن موبائیل ایپ‘‘ہوگا جو میٹرو اسٹیشنوں پر تمام آن اسٹریٹ اسمارٹ پارکنگ لاٹس سے صحیح وقت کی معلومات فراہم کرے گا۔ ٹووھیلرس اور فور وھیلرس کے مالکین یا ڈرائیور ان کے جی پی ایس کا استعمال کرتے ہوئے‘ ڈیجیٹل طورپر ان کے مطلوبہ پارکنگ لاٹ کی دستیابی کی کسی میٹرو اسٹیشن کا سفر کرنے سے قبل چیکنگ کرسکتے ہیں۔ وہ سادہ طورپر اپنے اسمارٹ فونس پر اپنے لوکل سرویسس کا استعمال کرسکتے ہیں اور سسٹم ان 24میٹرو اسٹیشنوں پر 4ہزار ٹووھیلر پارکنگ بیز اور 400فور وھیلر پارکنگ بیز میں ان کی گاڑیوں کو پارک کرنے کیلئے دستیاب بیز کا ڈسپلے کرے گا۔ صارف تب خالی کلر کو ڈبے نمبرس کو بُک کرسکتا ہے اور یا تو الکٹرانک ادائیگی کے ذریعہ یا پھر نقد ادائیگی کے ذریعہ انہیں الاٹ کردہ پارکنگ بیز کا استعمال کرسکتا ہے۔ پارکنگ کی شرح ٹووھیلر کیلئے فی گھنٹہ 3روپئے اور فور وھیلر کیلئے فی گھنٹہ 8روپئے ہوگی۔ تمام لین دین ڈیجیٹل رہے گا تاکہ شفافیت کا تیقن دیا جاسکے۔ پارکنگ خلاف ورزیوں کا پتہ الکٹرانک اور مینول دونوں طریقوں سے چلایا جائے گا اور ٹریفک پولیس کی نگرانی میں خانگی لائسنسی کے سیکیوریٹی ملازمین کی جانب سے تعمیل کا تیقن دیا جائے گا۔ میٹرو اسٹیشنوں کے پارکنگ ایریاز کو عصری طورپر فروغ دیا جائے گا۔ اس کے ڈھانکے ہوئے پارکنگ شیلٹرس ہوں گے اور وہاں مفت وائی فائی اور دیگر سہولتیں ہوں گی۔ ریڈی نے مزید بتایا کہ یہ پُر کشش اسمارٹ پارکنگ لاٹس سرگرمی کے مراکز بن جائیں گے۔ سی سی ٹی وی کیمرے سنٹرل کمانڈ اور کنٹرول سنٹر سے مربوط رہیں گے۔

جواب چھوڑیں