امیت شاہ کا 13جولائی کو دورہ تلنگانہ

صدر بی جے پی امیت شاہ 13جولائی کو شہر کے دورہ کے موقع پر لوک سبھا اور تلنگانہ قانون ساز اسمبلی کے بیک وقت انتخابات کے ضمن میں پارٹی کی تیاریوں کا جائزہ لیں گے۔ ریاستی بی جے پی صدر کے لکشمن نے آج بتایا وہ (شاہ) اس بات پر توجہ مرکوز کر رہے ہیں کہ 2019کے اسمبلی اور پارلیمنٹ انتخابات میں کس طرح کامیابی حاصل کی جائے۔ وہ ہماری رہنمائی کریں گے اور تلنگانہ کی تمام تر صوتحال سیاسی اور سماجی اور بی جے پی کی بنیادی سطح سے طاقت کا جائزہ لیں گے۔ لکشمن جنہوں نے حال ہی میں ریاست کے کئی اضلاع میں رتھ پر 14روزہ جنا چیتنیا یاترا شروع کی بتایا کہ پارٹی ریاست میں دو ہندسی لوک سبھا نشستوں پر کامیابی کا نشانہ رکھتی ہے۔ ریاست میں لوک سبھا کی 17نشستیں ہیں۔ یہ 2019کے تلنگانہ لیجسلیٹیو اسمبلی انتخابات میں اقتدار پر آنے کا مقصد رکھتی ہے۔ بی جے پی پہلے ہی اعلان کرچکی ہے کہ وہ 2019کے انتخابات میں تلنگانہ میں تنہا مقابلہ کرے گی۔ پارٹی نے 2014میں ٹی ڈی پی کے ساتھ اتحاد کرتے ہوئے انتخابات لڑے تھے۔ فی الوقت تلنگانہ میں بی جے پی کا لوک سبھا رکن اور پانچ ارکان اسمبلی ہیں۔ شاہ‘ آنے والے انتخابات کیلئے پارٹی کے ریاستی یونٹ کو ایک روڈ میاپ دیں گے۔ قومی صدر کے دورہ سے تلنگانہ میں پارٹی کو بڑی تقویت حاصل ہوگی۔ لکشمن جنہوں نے تلنگانہ جرنلسٹس یونین کی جانب سے منعقدہ ’’صحافت سے ملاقات‘‘ پروگرام میں حصہ لیا تھا۔ ادعا کیا کہ یاترا کو عوام کا اکثریتی رد عمل ملا ہے۔ ریاستی وزراء اور حکمران ٹی آر ایس کے ارکان اسمبلی نے یاترا کو کمتر جانا لیکن یہ کامیاب رہی۔ حکمران ٹی آر ایس پر کرپشن اور کئی محاذوں پر ناکامی کا الزام عائد کرتے ہوئے انہوں نے بی جے پی کی ٹی آر ایس کے ساتھ کسی خفیہ مفاہمت کے بارے میں پوچھے گئے سوال کو مسترد کردیا۔

جواب چھوڑیں