جلال آباد میں اسلامک اسٹیٹ کا خودکش حملہ‘12ہلاک

ایک خودکش بمبار نے آج خود کو افغان سیکیوریٹی فورسیس کی گاڑی کے قریب دھماکہ سے اڑالیا۔ کم ازکم 12افراد ہلاک ہوئے جن میں زیادہ تر شہری ہیں۔ عہدیداروں نے یہ بات بتائی۔ یہ ملک میں ہلاکت خیز تشدد کا تازہ واقعہ ہے۔ مشرقی شہر جلال آباد دھماکہ میں کم ازکم 5افراد زخمی بھی ہوئے اور قریب میں واقع پٹرول پمپ شعلہ پوش ہوگیا۔ صوبائی گورنر کے ترجمان عطاء اللہ خوگیانی نے اے ایف پی کو یہ بات بتائی۔ شدید جھلسی ہوئی حالت میں لوگوں کو اسپتال لایاگیا۔ محکمہ صحت کے ڈائرکٹر نجیب اللہ کاموال نے 12ہلاکتوں کی توثیق کی۔ واقعہ کے ایک عینی شاہد عصمت اللہ نے اے ایف پی کو بتایاکہ میں نے آگ کے ایک بڑے گولہ کو لوگوں کو دور پھینکتے دیکھا۔ لوگ جل رہے تھے۔ ٹولونیوز نے ایک ویڈیوآن لائن پوسٹ کیا جس میں جلی ہوئی گاڑیاں اور حملہ کے مقام پر جلی ہوئی دکانیں دکھائی گئیں۔ اسلامک اسٹیٹ گروپ نے اپنی عمق پروپگنڈہ ایجنسی کے ذریعہ حملہ کی ذمہ داری قبول کرلی۔ گڑبڑزدہ صوبہ ننگرہار میں جو پاکستان کی سرحد سے متصل ہے، انتہاپسندوں کا یہ تازہ حملہ ہے۔ اسلامک اسٹیٹ نے حالیہ ہفتوں میں اس صوبہ میں کئی خودکش بم حملوں کی ذمہ داری لی ہے جس میں کئی ہلاکتیں ہوئی تھیں۔ امریکہ اور افغان فورسیس نے داعش کے خلاف مہم جاری رکھی ہے۔ افغانستان میں طالبان بڑا عسکریت پسند گروپ ہیں۔ طالبان کے مقابلہ اسلامک اسٹیٹ نسبتاً چھوٹا گروپ ہے لیکن ملک کے مشرق اور شمال میں اس کا اثر زیادہ ہے۔ ایک دن قبل ہی امریکی وزیرخارجہ مائک پومپیو نے امید ظاہرکی تھی کہ افغان حکومت اور طالبان کے درمیان بات چیت ہوگی۔ وہ کابل کے غیر معلنہ دورہ پر تھے۔ امریکی وزیرخارجہ بننے کے بعد یہ ان کا پہلا دورۂ افغانستان تھا۔ رائٹر کے بموجب افغانستان میں ایک خودکش بمبار نے منگل کے دن کم ازکم 12افراد بشمول کئی بچوں کو ہلاک کردیا۔ مشرقی شہر جلال آباد میں اس حملہ کی ذمہ داری اسلامک اسٹیٹ نے لی ہے۔ حملہ آور نے پٹرول پمپ کے قریب خود کو دھماکہ سے اڑالیا۔ افغان انٹلیجنس ایجنسی کے لئے کام کرنے والے دو عہدیدار ہلاک ہوئے۔ پٹرول پمپ شعلہ پوش ہونے کے باعث 10 شہری بشمول بچے بھی مارے گئے۔ مرنے والوں میں بیشتر بچے تھے جو کار واش میں کام کررہے تھے۔ صوبائی کونسل کے ایک رکن سہراب قادری نے یہ بات بتائی۔ عہدیداروں کا کہنا ہے کہ بچوں کی نعشوں کی شناخت کی جارہی ہے۔ دھماکہ میں 8کاریں شعلہ پوش ہوگئیں۔ اسلامک اسٹیٹ نے اپنی عمق نیوزایجنسی پرجاری بیان میں حملہ کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا کہ افغان انٹلیجنس پر ایک شہیدی حملہ ہوا ہے۔ صوبائی محکمہ صحت کے ترجمان انعام اللہ میاں خیل نے بتایاکہ 5 زخمیوں کو اسپتال لے جایاگیا۔ گذشتہ ہفتہ جلال آباد میں اسلامک اسٹیٹ کے ایک خودکش بمبار نے سکھ اقلیت کو نشانہ بنایاتھا۔ 13 سکھ ہلاک ہوئے تھے۔ اسلامک اسٹیٹ کے لڑاکے ایسے وقت حملے کررہے ہیں جبکہ امریکی اور افغان فورسیس دور دراز صوبہ ننگرہار کے ضلع پر عسکریت پسندوں کا کنٹرول ختم کرنے کی کوشش میں ہیں۔ جلال آباد صوبہ ننگرہار کا دارالخلافہ ہے۔

جواب چھوڑیں